smog

عوام سموگ سے بچاﺅ کیلئے فصلوں، کوڑا کرکٹ، چمڑا اور ہسپتال کے فضلہ جات کو جلانے سے پرہیز کریں

ڈپٹی کمشنر تسنیم علی خاں نے کہا ہے کہ سموگ انسانی صحت کیلئے انتہائی خطرناک ہے جس پر قابو پانا معاشرے کے تمام طبقات کی قومی و اخلاقی ذمہ داری ہے، عوام الناس حکومت پنجاب کی خصوصی ہدایت کے مطابق سموگ سے بچاﺅ کیلئے فصلوں کی باقیات، کوڑا کرکٹ، چمڑا اور ہسپتال کے فضلہ جات کو جلانے سے پرہیز کریں ، خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے گی ۔

منڈی بہاﺅالدین ( ایم.بی.ڈین نیوز 27اکتوبر 2022) ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈپٹی کمشنر آفس میں انسداد سموگ مہم کے حوالے سے منعقدہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو ملک عباس ذوالقرنین، اسسٹنٹ کمشنر ہیڈ کوارٹر وحید حسن گوندل، اسسٹنٹ کمشنر پھالیہ فروا بتول، اسسٹنٹ ڈائریکٹر زراعت ،فیلڈ آفیسر ماحولیات عاطف عمران ، ڈی ایس پی ٹریفک محمد طارق شفیع اور دیگر متعلقہ محکموں کے افسران نے شرکت کی ۔

اجلاس کوانسداد سموگ کے حوالے سے کی جانے والی کاروائیوں سے متعلق آگاہ کرتے ہوئے اسسٹنٹ ڈائریکٹر زراعت نے بتایا کہ ماہ اکتوبر میں سموگ کی ایس او پیز کی خلاف ورزیوں اور دھان کی باقیات جلانے پر 40 ہزار روپے جرمانہ عائد کیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ فصلوں کی باقیات کو جلانے سے روکنے کیلئے محکمہ زراعت نے آگاہی مہم چلا رکھی ہے۔آگاہی مہم کے حوالے سے پمفلٹس بھی تقسیم کئے گئے اور مساجد میں اعلانات بھی کروائے گئے ہیں ۔

فیلڈ آفیسر ماحولیات عاطف عمران نے بتایا کہ ضلع میں 271 بھٹہ جات ہیں جن کی کڑی نگرانی کی جا رہی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ حکومتی گائیڈ لائنز کی خلاف ورزیوں پر 3 لاکھ 50 ہزار روپیہ جرمانہ عائد کیا گیا۔ انہوں نے مزید بتایا کہ دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے 655 گاڑیوں کو چیک کیا گیا اور مختلف خلاف ورزیوں پر 73 ہزار 500 روپے جرمانہ کیا گیا ۔98 گاڑیوں کے چالان کئے گئے جبکہ 3گاڑیاں ضلع کے مختلف تھانہ جات میں بند کی گئیں۔

ڈی ایس پی ٹریفک محمد طارق شفیع نے بتایا کہ اس ماہ سموگ کی مختلف خلاف ورزیوں 786 گاڑیوں کے چالان کرتے ہوئے16 گاڑیوں کو بند کیا گیا جبکہ 3 لاکھ روپیہ جرمانہ بھی کیا گیا ۔ سیکرٹری آر ٹی اے کی جانب سے 750 گاڑیوں کو چیک کیا گیا ، اینٹی سموگ کی مختلف خلاف ورزیوں پر 280 گاڑیوں کے چالان کئے گئے اور75ہزار روپے جرمانہ بھی کیا گیا ۔

بریفنگ سننے کے بعد ڈپٹی کمشنر تسنیم علی خاں نے افسران کوواضح ہدایت جاری کرتے ہوئے کہا کہ وہ انسداد سموگ مہم کے لئے پوری طرح الرٹ رہیں اور خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف فوری کاروائی کریں۔انہوں نے کہا کہ دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں کو کسی صورت شاہراہوں پر نہ آنے دیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ ملوں اور بھٹوں کی چمنیوں اور گاڑیوں سے نکلنے والا دھواں سموگ کا سبب بنتا ہے جس پر شاہراہوں پر حادثات سے قیمتی جانوں کا ضیاع ہوتا ہے۔

فضائی آلودگی کا باعث بننے والے صنعتی یونٹس جدید ٹیکنالوجی استعمال کرکے دھوئےں پر قابو پائیں کیونکہ سموگ فری ماحول میں ہی ہم سب کی بھلائی ہے۔انہوں نے تمام متعلقہ محکموں پر زور دیا کہ وہ اپنے اپنے دائرہ کار میں عام آدمی کو ماحولیاتی آلودگی کے نقصانات اور ان سے بچاﺅ کے بارے میں آگاہ کریں تا کہ انسانی صحت کیلئے خطرناک سموگ سے بچا جا سکے۔انہوں نے عوام الناس کو سموگ کے نقصانات کی زیادہ سے زیادہ آگاہی کی ضرورت پر زور دیا تاکہ منڈی بہاﺅالدین کو سموگ فری ضلع بنایا جا سکے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں