dengue

محکمہ صحت سمیت دیگر متعلقہ محکمے انسداد ڈینگی کیلئے اپنا بھر پورکردار ادا کریں

ڈپٹی کمشنر تسنیم علی خاں نے کہاہے کہ ڈینگی ایک کمیونٹی مرض ہے اس کے تدارک کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے جائیں، اس سلسلے میں کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا اور انسداد ڈینگی کے حوالے سے عوام الناس میں زیادہ سے زیادہ آگاہی پیدا کی جائے ۔

منڈی بہاﺅالدین ( ایم.بی.ڈین نیوز 28ستمبر 2022 ) ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈسٹرکٹ ایمرجنسی ریسپانس کمیٹی برائے انسداد ڈینگی کے حوالے سے منعقدہ جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں سی ای او ایجوکیشن محمد یاسین ورک، ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت شیخ محمد اقبال، ڈی ایچ اوز ڈاکٹر افتخار، ڈاکٹر شکیل اقبال بٹ، ڈاکٹر شکیل نذر، ایم ایس ڈی ایچ کیو ڈاکٹر قمر الزمان گورائیہ اور دیگر متعلقہ محکموں کے افسران بھی موجود تھے۔

قبل ازیں ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ڈاکٹر افتخار نے اجلاس کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایاکہ 20ستمبر سے 26 ستمبر 2022 کے دوران 518 ٹیموں نے ان ڈور 79 ہزار 775 گھروں کو چیک کیا گیا ہے جبکہ65 ٹیموں نے آﺅٹ ڈور 9 ہزار 680 گھروں کو چیک کیا۔ اسی طرح ان ڈور سرویلینس کے تحت3 لاکھ8 ہزار238 کنٹینرز چیک کئے گئے جبکہ آﺅٹ ڈور سرویلینس کے تحت36 ہزار322 کنٹینرز چیک کئے گئے اور ہاٹ سپاٹ کوریج 100 فیصد رہی۔

انہوں نے بتایا کہ انسداد ڈینگی کے حوالے سے حفاظتی اقدامات نہ کرنے پر59 نوٹسز بھی جاری کئے گئے ہیں ۔اجلاس میں انسداد ڈینگی کے حوالے سے ایم سیز نے اپنی سرگرمیوں بارے تفصیل سے بریفنگ دی ۔ بریفنگز سننے کے بعد ڈپٹی کمشنر نےکہا کہ محکمہ صحت سمیت دیگر متعلقہ محکمے انسداد ڈینگی کیلئے اپنا بھر پورکردار ادا کریں۔ محکمہ صحت کی انسداد ڈینگی ٹیمیں ان ڈور ،آوٹ ڈور سرویلنس کے کام میں مزید بہتری لائیں کیونکہ منڈی بہاﺅالدین کو ڈینگی فری بناناضلعی انتظامیہ کی اولین ترجیح ہے۔

انہوں نے بعض افسران کی اجلاس میں غیر موجودگی پر سخت برہمی کا ظہار کرتے ہوئے ہدایت کی کہ افسران اجلاس میں اپنی شرکت کو بر وقت یقینی بنائیں۔انہوں نے مزید ہدایت کی کہ تمام محکموں کے افسران اپنے اپنے ہاٹ سپاٹ کا ڈیٹا جلد از جلد ڈی سی آفس میں جمع کروائیں ۔ اس حوالے سے کسی قسم کی کوتاہی کو ہر گز برداشت نہیں کیا جائے گا ۔

انہوں نے افسران کو ہدایت کی کہ جن مقامات سے ڈینگی لاروا برآمد ہو یا اس کی افزائش کا باعث بننے والوں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی کی جائے اس معاملے میں کسی قسم کی لاپروائی اور فرائض میں غفلت کسی صورت برداشت نہیں کی جائے گی ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں