bus accident

سیہون میں مسافر وین کو حادثہ، بچوں اور خواتین سمیت 20 افراد جاں بحق

کراچی: سندھ کے ضلع سیہون میں انڈس ہائی وے پر مسافر وین گڑھے میں گرنے سے بچوں اور خواتین سمیت 20 افراد جاں بحق ہوگئے۔ تفصیلات کے مطابق انڈس ہائی وے پر سیلابی پانی کے اخراج کے لیے اتنظامیہ کی جانب سے کٹ لگائے تھے، جس کو 2 ماہ بعد بھی پُر نہیں کیا گیا، اسی باعث حادثہ پیش آیا۔

مسافر وین میں سوار افراد خیرپور میرس کے علاقے داؤد ہالی پوٹا سے درگاہ لعل شہباز قلندر جارہے تھے کہ انڈس ہائی وے پر ڈرائیور کو کٹ نظر نہ آیا۔ واقعے کے بعد ایدھی کے رضاکار جائے وقوعہ پہنچے اور انہوں نے ریسکیو آپریشن کر کے گاڑی میں سے لاشوں و زخمیوں کو نکال کر اسپتال منتقل کیا۔

یہ بھی پڑھیں: موٹروے پر خوفناک حادثہ، چلتی مسافر بس میں آگ بھڑک اٹھی

اسپتال ذرائع نے تصدیق کی کہ مرنے والوں میں آٹھ خواتین، چھ لڑکیاں اور چھ لڑکے شامل ہیں۔ لاشوں کی شناخت ہوگئی، جس کے مطابق مرنے والوں کا تعلق ایک ہی خاندان سے تھا۔ حادثے کے بعد محکمہ صحت سندھ اور مقامی انتظامیہ نے سیہون انسٹیٹیوٹ آف ہیلتھ سائنسز میں ایمرجنسی نافذ کردی۔

وین میں مسافروں کی تعداد
ڈپٹی کمشنر جامشورو کپٹن(ر)فریدالدین مصطفیٰ کے مطابق مسافر وین میں 33 افراد سوار تھے جن میں سے 13 کو زندہ بچا لیا گیا جبکہ زخمیوں کو عبداللہ شاہ اسپتال میں طبی امداد دی جارہی ہے۔ ڈی سی جامشورو نے بتایا کہ دو زخمیوں کی حالت تشیوشناک ہے۔

ڈپٹی کمشنر کے مطابق جائے وقوعہ پر ریسکو کا کام مکمل کرلیا گیا ہے جبکہ زخمیوں اور لاشوں کو عبداللہ شاہ اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

وزیراعلیٰ کا نوٹس
وزیراعلیٰ سدھ سید مراد علی شاہ کا سیہون اور بھان کے درمیان مسافر وین کے حادثے کا نوٹس لیتے ہوئے جامشورو پولیس کو جائے وقوع پر پہنچ کر ریسکیو آپریشن کرنے کی ہدایات دی۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ کوشش کی جائے کہ کوئی جانی نقصان نہ ہو، زخمیوں کو فوری طور پر طبی امداد دی جائے۔

علاوہ ازیں صوبائی وزیر اطلاعات شرجیل انعام میمن کا وین حادثہ میں قیمتی جانوں کے نقصان پر اظہار افسوس کرتے ہوئے جاں بحق افراد کے لواحقین سے ہمدردی کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ سندھ نے واقعہ کا نوٹس لے کر رپورٹ طلب کرلی جبکہ ریسکیو ٹیمیں روانہ کردی گئی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں