mandi bahauddin news today

اسلام امن و سلامتی کا دین ہے ، جوصبرو تحمل، رواداری،اتفاق و اتحاد اور بھائی چارے کا درس دیتا ہے، ڈی پی او

ڈپٹی کمشنر محمد شاہد نے کہا ہے کہ علمائے کرام عوام میں ہم آہنگی، محبت و اخوت اور برداشت کو فروغ دے کر امن و سلامتی کی فضا برقرار رکھنے میں اپنا کلیدی کردار ادا کرتے رہیں، ملک کو انتشار نہیں بلکہ ہم آہنگی کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک میں امن و امان کی فضا بر قرار رکھنے کیلئے تمام مکاتب فکر کے علماء، مشائخ اور ذاکرین تعاون کریں ۔

منڈی بہاوالدین( ایم.بی.ڈین نیوز 30مارچ 2022) ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر منڈی بہاءالدین انور سعید کنگرا نے کہا ہے کہ اسلام امن و سلامتی کا دین ہے ، جوصبرو تحمل، رواداری ،اتفاق و اتحاد اور بھائی چارے کا درس دیتا ہے ، رمضان المبارک کے مہینے میں پولیس ، سکیورٹی ادارے، مختلف مکاتب فکر کے علمائے کرام، انجمن تاجران اور دیگر سٹیک ہولڈرز کی معاونت سے ضلع میں امن و امان کی صورتحال کو برقرار رکھا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں: پاکستان میں پہلا روزہ 3 اپریل اور عیدالفطر 3 مئی کو ہوگی، رویت ہلال کونسل کی پیشگوئی

ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈی سی آفس میں ضلعی امن و بین المذاہب ہم آہنگی کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اجلاس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل محمد شفیق، تینوں تحصیلوں کے اسسٹنٹ کمشنرز، سی او ایم سیز، انچارج ریسکیو 1122، متعلقہ محکموں کے افسران، ممتاز علمائے کرام، اور انجمن تاجران کے رہنماﺅں سمیت دیگرزنے شرکت کی۔

ڈپٹی کمشنر محمد شاہد نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ منڈی بہاﺅالدین کے علمائے کرام، مشائخ عظام اور زاکرین ہمیشہ محبت اور بھائی چارے کا پیغام دیتے ہیں۔ یہی جذبہ رمضان کے دوران بروئے کار لانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے رمضان میں کئے گئے ضلعی اقدامات کا ذکر کرتے ہوئے بتایا کہ صوبائی حکومت کی ہدایت پر شہریوں کی سہولت کے لئے ضلع بھر میں رمضان بازار قائم کئے گئے ہیں جہاں پر کم آمدنی والے افراد کو سستے داموں اشیاءخوردونوش فراہم کی جا رہی ہیں اور عوام الناس بالخصوصی کم آمدنی والے افراد کو حقیقی معنوں میں رمضان بازاروں سے ریلیف حاصل ہو رہا ہے ۔

آج پھل، سبزی و گوشت کی تازہ ترین ریٹ لسٹ دیکھیں

انہوں نے واضح کیا کہ گراں فروشوں اور زخیرہ اندوزوں کو من مانی نہیں کرنے دیں گے۔ڈی پی او انور سعید کنگرا نے کہا ہے کہ تمام مکاتب فکر کے علماء مل کر اپنے اندر اتفاق ،اتحاد و بھائی چارے کی فضاء کو قائم رکھیں اور برداشت اور رواداری کی مثبت سوچ کو فروغ دیں۔ ہم سب نے مل کر اس امن کو قائم رکھنا ہے۔

انہوں نے نے علمائے کرام کو باور کروایا کہ موجودہ ملکی حالات کے پیش نظر اتحاد بین المسلمین اورمذہبی ہم آہنگی کی اس وقت شدید ضرورت ہے۔ کیونکہ ہمارے ملک و قوم کہ اندرونی و بیرونی دشمن عناصر اپنے مذموم عزائم اور سازشوں کے ذریعے انتشار پھیلانا چاہتے ہیں۔ جسے ہم سب نے مل کر ناکام بنانا ہے اس موقع پر مختلف مکاتب فکر کے علمائے کرام اور انجمن تاجران کے نمائندوں نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا اور گزارشات پیش کیں۔

ڈپٹی کمشنر اور ڈی پی او نے مسائل کے حل کی یقین دہانی کروائی ۔اس موقع پر علمائے کرام اور انجمن تاجران کے نمائندوں نے اپنے بھر پور تعاون کا یقین دلاتے ہوئے اس عزم کا اظہار کیا کہ ضلع میں امن کو فروغ دینے کے لئے ضلعی انتظامیہ کے ساتھ باہمی کوارڈینیشن کے ذریعے مثبت سرگرمیاں جاری رکھیں گے۔ اجلاس کے اختتام پر دعائے خیر بھی کرائی گئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں