سعودی عرب نے عمرہ کی نئی شرائط جاری کردیں

سعودی وزارت حج و عمرہ نے سعودی عرب میں عمرہ زائرین کی آمد کے حوالے سے شرائط جاری کر دی ہیں۔

سعودی عرب کی سرکاری خبر رساں ایجنسی کے مطابق نئے شرائط کے مطابق سعودی عرب حکومت کی جانب سے منظور شدہ ویکسین لگوانے والے غیر ملکی زائرین کو سعودی عرب میں آمد کے ساتھ ہی بغیر کسی قرنطینہ کے عمرہ ادا کرنے کی اجازت ہو گی۔ اعلامیے کے مطابق ایسے افراد جنہوں نے عالمی ادارہ صحت کی طرف سے منظور شدہ ویکسین لگوائی ہوئی ہے انہیں عمرہ کی ادائیگی سے قبل 3 دن تک قرنطینہ میں رہنا پڑے گا اور 48 گھنٹوں بعد ان افراد کو منفی کرونا ٹیسٹ کی صورت میں عمرہ کی اجازت دی جائے گی۔

سعودی حکام کے مطابق تمام زائرین کے لیے لازمی ہے کہ وہ اپنے ممالک سے کرونا وائرس کی ویکسین کی ضروری خوراک مکمل کر کے آئیں۔ واضح رہے کہ کرونا وائرس کے نئے ویرینٹ اومی کرون کے سامنے آںے کے بعد کے انکشاف پر دنیا بھر میں ایک بار پھرسفری پابندیوں سے متعلق خدشات سر اٹھانے لگے ہیں۔

عالمی ادارہ صحت نے کرونا کی نئی اور خطرناک قسم سامنے آنے پر انتباہ بھی جاری کردیا۔ ڈبلیو ایچ او کا کہنا ہے کہ محقيقن کو وائرس کی نئی قسم کے اثرات سمجھنے ميں وقت لگے گا۔ دوسری جانب نئے وائرس کے سامنے آنے پر امريکا نے جنوبی افريقہ سميت 7 ممالک پر سفری پابندی عائد کردی ہے، جب کہ برطانيہ کی جانب سے بھی جنوبی افريقہ پر فضائی پابندی عائد کردی گئی ہے۔ نئے وائرس کے انکشاف پر دنیا بھر میں ایک بار پھر خدشات سر اٹھانے لگے ہیں۔

سعودی عرب سمیت متعدد خلیجی ممالک نے بھی 7 افریقی ممالک سے فلائٹ آپریشن فی الحال ملتوی کردیا ہے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق سعودی عرب نے کرونا وائرس کی نئی جنوبی افریقی قسم کے تحت 7 ممالک کےلیے پروازیں معطل کی ہیں۔ رپورٹ کے مطابق ریاض نے 7 ممالک کےلیے پروازیں معطل کی ہیں، اُن میں جنوبی افریقا، نمیبیا، موزمبیق، زمبابوے اور دیگر افریقی ملک شامل ہیں۔ دوسری طرف انٹرنیشنل ہاکی فیڈریشن نے جنوبی افریقا میں 5 دسمبر سے شروع ہونے والا جونیئر ہاکی ورلڈ کپ معطل کردیا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں