tlp protest

گجرات میں ٹی ایل پی کی ریلی روکنے کیلئے منڈی بہاءالدین کی پولیس موجود دہی

اسلام آباد( تازہ ترین – این این آئی۔ 24 اکتوبر2021ء) کالعدم ٹی ایل پی اور حکومت کے درمیان کامیاب مذاکرات کے بعد وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید کی ہدایت پربعض شاہراہوں سے کنٹینرز ہٹادیئے گئے ۔کالعدم تحریک لبیک پاکستان کے دھرنے کو روکنے کے لیے راولپنڈی اسلام آباد سمیت پنجاب کے بیشتر اضلاع میں تیسرے روز بھی اہم شاہراہیں مکمل سیل تھیں، میٹروبس سروس کو راولپنڈی اسلام آباد دونوں شہروں میں مکمل بند رکھ کر صدر اور مریڑھ اسٹیشنز پر پولیس کی مزید نفری تعینات کی گئی اور پبلک ٹرانسپورٹ بھی بند رہی تاہم وزیرداخلہ شیخ رشید کے احکامات کے بعد اب راولپنڈی مری روڈ سمیت تمام شاہراہوں سے کنٹینرز ہٹادیئے گئے ہیں۔

حکومت سے کامیاب مذاکرات کے بعد اسلام آباد کی جانب جانے والے کالعدم ٹی ایل پی کی ریلی اس وقت مریدکے جی ٹی روڈ پر ہی موجود ہے، جو مذاکرات کے دوران طے پائے گئے نکات پر عمل درآمد تک ممکنہ طور پر وہیں قیام کریں گے۔ گزشتہ روز جی ٹی روڈ پر وزیر آباد، چناب ٹول پلازہ گجرات اور مریدکے کے مقام پر ٹریفک کے لیے بند جبکہ دیگر تمام مقامات پر نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹر وے پولیس کی عملداری میں آنے والا جی ٹی روڈ کھلا رہا۔

گجرات میں ریلی روکنے کے لیے 5 اضلاع نارروال، حافظ آباد، سیالکوٹ، منڈی بہاؤالدین اور سرگودھا کی پولیس موجود رہی، چناب پل دونوں اطراف سے خندقیں کھودنے کے ساتھ ساتھ کنٹینرز لگا بند کر دیا گیا ، دوسری جانب جی ٹی روڈ بند ہونے کی وجہ سے ٹریفک کی لمبی لمبی قطاریں لگ گئیں۔راولپنڈی اسلام آباد میں کالعدم جماعت کے متوقع احتجاج سے نمٹنے کے لیے تیسرے روز بھی قانون نافذ کرنے والے ادارے اور پولیس ہائی الرٹ رہی.

مری روڈ اور گرد نواح کے علاقوں میں کرفیو جیسی صورتحال سے معمولات زندگی متاثر رہے، جڑواں شہروں میں میٹرو بس سروس مکمل طور پر بند رہی جبکہ پبلک ٹرانسپورٹ بھی نا ہونے کے برابر تھی، میٹرو بس سروس کو راولپنڈی اسلام آباد دونوں شہروں میں مکمل بند رکھ کر صدر اور مریڑھ اسٹیشنز پر پولیس کی مزید نفری تعینات کیا گیا تھا۔ مری روڈ پر اکثر کاروباری مراکز بند رہے تاہم کالج روڈ سرکلر روڈ سمیت اندرون شہر دیگر علاقوں میں دکانیں کھلی ہیں تاہم گاہگ وغیرہ نہ ہونے کے برابر ہیں، اور اہم شاہراہیں سیل ہونے سے شہریوں کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑ ا

اپنا تبصرہ بھیجیں