سال 2020 میں منڈی بہاءالدین کے 271 بھٹہ جات کو رجسٹرڈ اور زگ زیگ ٹیکنالوجی پر منتقل کیا گیا

اسسٹنٹ ڈائریکٹر ماحولیات سید اظہار الحق نقوی نے محکمہ ماحولیات منڈی بہاﺅالدین کی سال 2020 کی کارکردگی بتاتے ہوئے کہا ہے کہ ضلع بھر میں 271 بھٹہ جات کو رجسٹرڈ کر کے تمام بھٹہ جات زگ زیگ ٹیکنا لوجی پر منتقل کر دئیے گئے ہیں اور اس حوالے سے ضلع منڈی بہاﺅالدین پنجاب بھر میں تیسری پوزیشن ہے ۔

منڈی بہاءالدین ( ایم.بی.ڈین نیوز 20ستمبر 2021) انہوں نے بتایا کہ بھٹوں کو زگ زیگ ٹیکنالوجی پر منتقل نہ کرنے پر 97 بھٹہ جات سیل اور 45 بھٹہ جات کے خلاف ایف آئی آرز درج کراوائی گئیں۔ انہوں نے مذید بتایا کہ صوبے بھر میں انسداد سموگ ، دھواں اور فضائی آلودگی کے حوالے سے پہلے سے ہی پابندی عائد ہے جس کے تحت کوڑا کرکٹ، پولی تھین بیگ کی تیاری، ربڑ کی اشیاء، دھان اور فصلوں کی باقیات کو آگ لگانے اور ٹائرز جلانے پر سخت پابندی عائد ہے۔

دھان کی باقیات جلانے پر 123 افراد کے خلاف ایف آئی آرز درج کروائی گئی ہیں۔ دھواں اور بڑے پریشر ہارن پر 472 گاڑیوں کے چالان اور 3 لاکھ 54 ہزار روپے جرمانہ بھی کیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ وزیراعظم پاکستان عمران خان کی کلین اینڈ گرین پاکستان مہم کے تحت ضلع کے مختلف علاقوں میں 9 ہزار پودے لگائے گئے ہیں جن کی باقاعدہ جیو ٹیگنگ بھی کی گئی ہے۔اسسٹنٹ ڈائریکٹر ماحولیات نے بتایا کہ انسداد ڈینگی کی خلاف ورزیوں پر 23 افراد کے خلاف ضلع کے مختلف تھانہ جات میں ایف آئی آرز درج کروائی گئی ہیں جبکہ شوگر ملز اور رائس ملز پر ٹریٹمنٹ پلانٹ کی تنصیب کو بھی یقینی بنایا گیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ ہسپتالوں کے فضلہ جات کو ٹریٹ کرنے کیلئے ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال میں انسریٹر کی تنصیب ممکن بنائی گئی ہے جس میں سرکاری اور پرائیویٹ ہسپتالوں کے فضلہ جات کو ٹریٹ کیا جاتا ہے۔سید اظہار الحق نے بتایا کہ پنجاب ہسپتال ویسٹ مینجمنٹ رولز 2014 کے تحت ماحولیاتی آلودگی پھیلانے پر (جو کہ انسانی صحت کیلئے انتہائی ضرر رساں ہے) کی خلاف ورزی پر 10 ہسپتالوں کو سیل کر کے 25 ہزار روپے جرمانہ بھی کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومتی ہدایت کے مطابق ضلع کو فضائی آلودگی سے پاک رکھنا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا مقصد کسی کا کاروبار تباہ کرنا یا نقصان کرنا نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ماحول کو آلودگی سے پاک رکھنا ہم سب کی ذمہ داری ہے ۔ کاروباری حضرات ماحول دوست طریقہ کار اپنا کر اپنے کاروبار چلا ئیں تا کہ ان کے علاوہ عوام الناس کو بھی صاف ستھرا اور آلودگی سے پاک ماحول میسر آ سکے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں