ہیپاٹائٹس ڈے کے حوالہ سے 23 تا 30جولائی کوضلع کےہسپتالوں میں تربیتی سیشنز اور سیمینار منعقد کئے جائیں گے، ہیلتھ

منڈی بہاﺅالدین ( ایم.بی.ڈین نیوز 19 جولائی2021 )سی ای او ہیلتھ ( ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی) ڈاکٹر محمد الیاس گوندل نے کہا ہے کہ محکمہ صحت وزیراعلیٰ پنجاب کے مشن ہیپاٹائیٹس فری پنجاب کے لئے کوشاں ہے ، محکمہ صحت کی جانب سے عوام لاناس کو ہیپاٹائٹس سے تحفظ و بچاﺅ کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے جا رہے ہیں، ہیپاٹائٹس ڈے کے حوالہ سے 23جولائی تا 30جولائی 2021کوضلع کے آر ایچ سیز ، ٹی ایچ کیوز اور ڈی ایچ کیو میں تربیتی سیشنز اور سیمینار منعقد کئے جائیں گے ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے مختلف ہیپاٹائٹس کلینکس کا دورہ کر کے سہولیات کا جائزہ لیتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کیمپس کے تمام کاﺅنٹرز، ریکارڈز رجسٹر ادویات کا معائنہ کیا اور انتظامات کو چیک کیا ۔ انہوں نے ضروری ہدایت بھی جاری کیں۔ اس موقع پر ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ڈاکٹر محمد افتخار، میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈی ایچ کیو ڈاکٹر مہار اختر حسین بلوچ، معروف ڈاکٹرز اور دیگر بھی موجود تھے۔

ہیپاٹائٹس پروگرام کے فوکل پرسن ڈاکٹر محمد افتخار نے بتایا کہ پنجاب حکومت کی ہدایت پر ہیپاٹائٹس کے علاج اور مفت ادویات کی فراہمی کیلئے ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال اور تحصیل پھالیہ اور ملکوال میں ٹی ایچ کیوز میں جبکہ سلیمان میڈیکل کمپلیکس (اولڈ ڈی ایچ کیو کے سامنے) ہیپاٹائیٹس کلینکس قائم کئے گئے ہیں۔ جہاں پر سپیشلسٹ ڈاکٹرز مریضوں کو چیک کرتے ہیں اور مفت ٹیسٹ اور ادویات فراہم کی جاتی ہیں ۔

انہوں نے بتایا کہ ادویات کی کوئی کمی نہیں ہے۔انہوں نے مذید بتایا کہ ہیڈ فقیریاں ، شفقت آباد، کدھر شریف اور رکھ بلوچ میں کیمپس لگا کر 279 افراد کی سکریننگ کی گئی جس میں 13 افراد کو ہیپاٹائیٹائٹس بی اور 49 افراد میں ہیپاٹائیٹائٹس سی کی تشخیص ہوئی ۔انہوں نے بتایا کہ 1356باربرز سیلون اور 270بیوٹی سیلون کی رجسٹریشن کر کے 709 باربرز کو باربرز کٹس فراہم کی گئی ہیں ۔اس کے علاوہ 14 تھیٹر شو رولر مشین، 35سنکس، 418شارپ کنٹینرز، 80سرنج کٹرز،35 ہسپتال ویسٹ بن سیٹ،70 ہسپتال ویسٹ بن ییلو بھی فری تقسیم کئے گئے ہیں ۔

سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر محمد الیاس نے کہاکہ یہ بات تشویشناک ہے کہ ضلع میں ہیپاٹائٹس کے مریضو ں کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔انہوں نے کہاکہ ہیپاٹائٹس ڈے کو منانے کا مقصد عوام الناس کو اس خطرناک مرض کے حوالے سے آگاہی فراہم کرنا ہے۔ہیپاٹائٹس سے متاثرہ 95%افراد جانتے ہی نہیں کہ وہ ہیپاٹائٹس بی یا سی سے متاثر ہیں اور یہ قابل علاج مرض ہے جس سے متاثرہ 90سے 95%افراد علاج کے بعد صحت یاب ہوجاتے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ آلودہ پانی پی کر،استعمال شدہ سرنج کو دوبارہ استعمال کرنے سے،بغیر ٹیسٹ شدہ خون کی منتقلی سے،متاثرہ حاملہ عورت سے اس کے بچے کو اور حجا م یا بیوٹیشن کے آلودہ اوزاروں سے یہ مرض پھیل سکتا ہے جبکہ احتیاطی تدابیر اپنانے سے اس مرض سے حفاظت ممکن ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں