Overseas Pakistani Committee Mandi Bahauddin

اوورسیز پاکستانی کمیٹی منڈی بہاوالدین کو مختلف محکموں کی 22 شکایات پیش

ڈسٹرکٹ چیئرمین اوورسیز کمیٹی محمد عارف گوندل اور ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو توقیر الیاس چیمہ نے کہا ہے کہ بیرون ممالک میں مقیم پاکستانیز کے مقامی سطح پرمسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کئے جا رہے ہیں، سمندر پار پاکستانیز پاکستان کی شناخت اور سفیر ہیں ، انہوں نے کہا کہ سردار عثمان بزدار حکومت سمندر پار پاکستانیوں کو یہاں پر درپیش مشکلات کے حل اور انہیں تمام ممکنہ ریلیف فراہم کرنے کیلئے انتہائی سنجیدہ ہے ِاوورسیز کمیٹی کے اجلاسوں میں درخواستوں اور شکایات کا فوری نوٹس لے کر بلا تاخیر محکمانہ اقدامات کو یقینی بنانے کی ہدایات بھی جاری کی جاتی ہیں۔

منڈی بہاﺅالدین( ایم.بی.ڈین نیوز 14 جولائی2021) ان خیالات کااظہار انہوں نے آج یہاں ڈپٹی کمشنر آفس میں ضلعی اوورسیز پاکستانیز کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو توقیر الیاس چیمہ،انسپکٹر غضنفر، فوکل پرسن و سی او تحصیل کونسل شہزاد اختر تارڑ،پراسیکیوشن وریونیو افسران ،انسپکٹر غضنفر، مدثر احمد،ممبر اورسیز کمیٹی فیصل گوندل، ترجمان اوورسیز کمیٹی حمزہ علی ، مختلف محکموں کے افسران، درخواستگزار اور اوورسیز پاکستانیز کے نمائندے بھی موجود تھے۔

اجلاس میں اراضی پر قبضوں ، جائیدادوں کی وراثتی تقسیم، رقوم کے لین دین، تجاوزات، دھوکہ دہی اور دیگر مسائل پر مشتمل درخواستیں اور شکایات پیش کی گئیں۔ قبل ازیں اجلاس میں اوورسیز پاکستانیوں کے مسائل کے حوالے سے کمیٹی میں 22 شکایات پیش کی گئیں جو محکمہ ریونیو،پولیس، سوئی گیس، ایکسائزاور بنک آف پنجاب سے متعلق تھیں۔

ضلعی چیئرمین اوورسیز کمیٹی محمد عارف گوندل اور ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو توقیر الیاس چیمہ نے مختلف محکموں کے افسران کو کیسز سے متعلق اپنی پراگریس رپورٹ اور بعض زیر التوا کیسزمیں فوری کاروائی کر کے میرٹ پر رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی۔ انہوں نے افسران کو ہدایت کی کہ وہ پوری تیاری کے ساتھ اجلاس میں شرکت کو یقینی بنائیں۔

انہوں نے متعلقہ اسسٹنٹ کمشنرز ، پولیس اور دیگر محکموں کو ہدایت کی کہ وہ اوورسیز پاکستانیز کے مسائل کے حل کرنے میں خصوصی دلچسپی لیں اوراعلیٰ حکام کی جانب سے احکامات پر عملدرآمد کو یقینی بنائیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ان کے مفادات کا تحفظ ہر صورت میں یقینی بنایا جائے گا۔ نا جائز قابضین اور دھوکہ دہی کے مرتکب افراد کو قانون کے شکنجے میں لایا جائے گا اور کسی فریق کے ساتھ نا انصافی نہیں ہونے دی جائے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں