قرعہ اندازی کے ذریعے منڈی بہاوالدین کے خوش نصیب کسانوں میں 14عدد ہیپی سیڈرز اور 14 عدد سلیشرز تقسیم

منڈی بہاﺅالدین( ایم.بی.ڈین نیوز 22 جون2021) ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل محمد شفیق نے کہا ہے کہ زرعی شعبے میں جدید ٹیکنالوجی اپنا کر ہی ترقی کی جا سکتی ہے ، وزیراعظم پاکستان کے ویژن کے تحت زرعی پیداوار میں اضافے کیلئے کسانوں کو مشینی کاشت کی نا صرف ترغیب دی جا رہی ہے بلکہ عملی طور پر کاشت کاروں میں 80 فیصد سبسڈی پر ہیپی سیڈر اور سلیشر ایسے زرعی آلات قرعہ اندازی کے ذریعے فراہم کئے جا رہے ہیں تا کہ وہ دھان کے مڈھ جلائے بغیر صحت مند فضا کو قائم رکھنے اور اجناس میں اضافے کو ممکن بنا سکیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے آج یہاں اسسٹنٹ ڈائریکٹر زراعت (توسیع) کے کمیونٹی ہال میں دھان کی پیداوار میں اضافہ کے قومی منصوبے اور دھان کی باقیات کو زرعی مشینی آلات سے محفوظ طریقے سے ٹھکانے لگانے کے حوالے سے قرعہ اندازی کے ذریعے زرعی آلات حاصل کرنےو الے خوش نصیب کسانوں کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تقریب میں ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت (توسیع) شیخ محمد اقبال، زراعت آفیسر محمد افضل، کسانوں اور کاشت کاروں کی ایک کثیر تعداد موجود تھی۔

قبل ازیں ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت (توسیع) شیخ محمد اقبال نے اجلاس کو بتایا کہ حکومت کی جانب سے فراہم کی جانے والی زرعی مشینری و آلات میں 14عدد ہیپی سیڈرز اور 14 عدد سلیشرز شامل ہیں ۔اس حوالے سے قرعہ اندازی کے ذریعے خوش نصیب کسانوں کو یہ زرعی آلات و مشینری تقسیم کئے جا رہے ہیں۔جن پر حکومت کی جانب سے 80 فیصد سبسڈی فراہم کی ہے ۔

ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل محمد شفیق نے قرعہ اندازی کے بعد خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیراعظم پاکستان کے زرعی ایمرجنسی پروگرام کے تحت ملک بھر کے کسانوں اور کاشت کاروں کو سبسڈی پر زرعی آلات و مشینری قرعہ اندازی کے ذریعے فراہم کئے جا رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ حکومت کاشتکاروں کی ضروریات کو مد نظر رکھتے ہوئے زرعی آلات و دیگر منصوبوں پر اربوں روپے خرچ کر رہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ کسان ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے ۔ کسانوں کو جتنا زیادہ ریلیف حاصل ہو گا ملک اتنا زیادہ ترقی کرے گا۔انہوں نے کہا کہ ان سہولیات کا مقصد ملک ، صوبے سمیت کسانوں کو خود کفیل بنانا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں