منڈی بہاﺅالدین میں آہلہ روڈ، مانگٹ، لیدھر اور شہیدانوالی روڈ پر5ملوں کو سیل کر دیا گیا

منڈی بہاو الدین( ایم.بی.ڈین نیوز 23ستمبر2020 )ڈپٹی کمشنر طارق علی بسرا کی ہدایت پر محکمہ ماحولیات نے پنجاب انوائرنمنٹ پروٹیکشن ایکٹ 1997کی خلاف ورزی کرنے پر منڈی بہاﺅالدین میں آہلہ روڈ، مانگٹ، لیدھر اور شہیدانوالی روڈ پر5ملوں کو سیل کر دیا۔یہ بات محکمہ ماحولیات کی جانب سے ڈپٹی کمشنر کو پیش کی جانے والی رپورٹ میں بتائی گئی۔

رپورٹ کے مطابق ضلع بھر میں ماحولیاتی آلودگی اور اینٹی سموگ کے حوالے سے کاروائیاں پورے زور و شور سے جاری ہیں جس پر ڈپٹی کمشنر نے محکمہ ماحولیات کے افسران کو ہدایت کی کہ اس امر کو یقینی بنایا جائے کہ ضلع بھر میں بھٹہ مالکان فوری طور پر اپنے بھٹوں کو زگ زیگ ٹیکنالوجی پر منتقل کریں۔ انہوں نے کہا کہ کاشت کاروں اور کسانوں کو فصلوں کی باقیات کو محفوظ طریقے سے ٹھکانے لگانے سے متعلق بھی آگاہی فراہم کی جائے۔ ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ فضائی آلودگی کا باعث بننے والے یونٹس اور رات کو غیر معیاری ایندھن استعمال کرنے والوں کے خلاف قانون کے مطابق کاروائی کی جائے کیونکہ اس بارے میں سپریم کورٹ کی ہدایات پہلے سے ہی واضح طور پر موجود ہیں۔

انہوں نے کہا کہ فضائی آلودگی کا باعث بننے والے صنعتی یونٹس کو جدید ٹیکنالوجی استعمال کرکے دھوئےں پر قابو پائیں کیونکہ سموگ فری ماحول میں ہی ہم سب کی بھلائی ہے۔حکومت کی ہدایت پر صوبے بھر کی طرح سموگ میں اضافے کے خطرے کے پیش نظر دھواں پھیلانے والے عوامل کو کنٹرول کرنے کیلئے ضلع منڈی بہاﺅالدین میں بھی دفعہ 144کے تحت کوڑا کرکٹ،پولی تھین بیگ ، ربڑ کی اشیائ، دھان اور فصلوں کی باقیات کو آگ لگانے اور پرانے ٹائر جلانے پر پابندی عائد کر رکھی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سموگ انسانی صحت کیلئے انتہائی نقصان دہ ہے اور اس ضمن میں کسی کو بھی انسانی جانوں سے کھیلنے کی ہرگز اجازت نہیں دی جائیگی اور قانون کے مطابق دھواں پھیلانے کا باعث بننے والے افراد کے خلاف سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائیگی۔

انہوں نے ڈی او ماحولیات کو ہدایت کی کہ وہ ضلع بھر میں موجود صنعتی یونٹس اور فیکٹری مالکان کو زیادہ سے زیادہ پودے لگانے کا پابند کریں بلکہ ان کی مکمل نگہداشت کے انتظامات بھی کئے جائیں اور ان امور سے متعلق مصدقہ رپورٹ بھی پیش کی جائے۔انہوں نے مزید ہدایت کی کہ وہ عوام الناس میں اینٹی سموگ مہم اور آلودگی کے بارے میں بھی آگاہی مہم چلائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں