کس صوبے، شہر اور سیاست دان نے کتنا ٹیکس دیا؟ تفصیلات جاری

اسلام آباد: ایف بی آر نے ٹیکس ڈائریکٹری 2018 جاری کردی، ٹیکس کلیکشن میں سندھ بازی لے گیا اور پہلے نمبر پر آیا، فائلرز زیادہ ہونے کے باوجود پنجاب ٹیکس کلیکشن میں دوسرے نمبر پر آیا، شہروں میں کراچی اور سیاست دانوں میں شاہد خاقان عباسی سرفہرست رہے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق ایف بی آر نے ٹیکس وصولی سے متعلق 2018ء کی ڈائریکٹری جاری کردی جس میں مختلف شعبہ جات، شخصیات، صوبہ اور شہر کے اعتبار سے ٹیکس وصولی کی درجہ بندی ہوئی ہے۔

صوبوں میں سندھ پہلے نمبر پر
ٹیکس ڈائریکٹری کے مطابق حکومت کو سندھ سے 44.91 فیصد، پنجاب 34.99، اسلام آباد 14.77، کے پی کے 3.54، بلوچستان 1.67 اور گلگت بلتستان سے 0.12 فیصد ٹیکس جمع ہوا۔

شہروں میں کراچی پہلے نمبر پر
کراچی سے سب سے زیادہ 209 ارب 10 کروڑ 71 لاکھ 38 ہزار روپے ٹیکس جمع ہوا۔ کراچی جنوبی سے 114 ارب 22 کروڑ 99 لاکھ 55 ہزار، کراچی وسطی سے 9 ارب 5 کروڑ 93 لاکھ 71 ہزار روپے، کراچی شرقی سے 34 ارب 9 کروڑ 25 لاکھ روپے ٹیکس جمع ہوا۔ اسلام آباد سے 204 ارب 14 کروڑ 86 لاکھ 73 ہزار روپے، فیصل آباد سے 16 ارب 26 کروڑ 41 لاکھ 48 ہزار روپے، گوجرانوالہ سے 7 ارب 92 کروڑ 62 لاکھ 64 ہزار روپے ٹیکس جمع ہوا۔

سیاستدانوں میں نمبر ون
مالی سال 2018ء کے دوران ارکان پارلیمان کی ٹیکس تفصیلات بھی جاری کی گئیں جن کے مطابق ٹیکس ادا کرنے والے سیاست دانوں میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی سرفہرست رہے جنہوں نے 24 کروڑ 13 لاکھ 29 ہزار 362 روپے ٹیکس ادا کیا۔

وزیراعظم، شہباز شریف، آصف زرداری اور بلاول نے کتنا ٹیکس دیا
وزیراعظم عمران خان نے 2 لاکھ 82 ہزار 449 روپے، شہباز شریف نے 97 لاکھ 30 ہزار 595 روپے، ریاض فتیانہ نے 11 ہزار روپے ٹیکس دیا، فرخ حبیب نے ایک لاکھ 83 ہزار 727 روپے ٹیکس دیا۔ رانا ثناء اللہ نے 13 لاکھ 88 ہزار 275 روپے، حماد اظہرنے 5 کروڑ 94 لاکھ 42 ہزار 700 روپے، اسد عمر نے 53 لاکھ 46 ہزار 342 روپے اور شیخ رشید نے 5 لاکھ 79 ہزار 11 روپے ٹیکس دیا۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے 1 لاکھ 83 ہزار 9 سو روپے، نور عالم خان نے 30 ہزار 458، عمرایوب نے 2 کروڑ 60 لاکھ 55 ہزار 517، بلاول بھٹو زرداری نے 2 لاکھ 94 ہزار 117 روپے، آصف علی زرداری نے 28 لاکھ 89 ہزار 455 روپے اور حمزہ شہباز نے 87 لاکھ 5 ہزار 368 روپے ٹیکس ادا کیا۔

کس نے بالکل ٹیکس نہیں دیا
وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے ٹیکس ادا نہیں کیا۔

وزرائے اعلیٰ
وزیراعلی خیبر پختونخواہ محمود خان نے 2 لاکھ 35 ہزار 982 روپے، وزیراعلی بلوچستان جام کمال خان نے 48 لاکھ 18 ہزار948 روپے اور وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے10 لاکھ 22 ہزار 184 روپے ٹیکس ادا کیا۔ اسی طرح مراد علی شاہ نے ایسوسی ایشن آف پرسنز کی صورت میں بھی 63 لاکھ 54 ہزار 761 روپے ٹیکس دیا۔

خیبر پختون خوا کے ارکان اسمبلی کی تفصیلات
خیبرپختونخوا سے ٹیکس دینے والوں میں وزیراعلی محمود خان کے بعد اپوزیشن لیڈر اکرم خان درانی نے 3 لاکھ 13 ہزار 407 روپے، مولانا لطف الرحمان نے 4 لاکھ 73 ہزار 156، سردار محمد یوسف نے دو لاکھ 83 ہزار 342 ٹیکس دیا۔

قلندر لودھی نے دو لاکھ 28 ہزار 428، اکبر ایوب نے 6 لاکھ 91 ہزار 615، شہرام خان نے دو لاکھ 28 ہزار اورعاطف خان نے 6 لاکھ 12 ہزار روپے ٹیکس ادا کیا۔ اسی طرح اسپیکر مشتاق احمد غنی نے دو لاکھ 8 ہزار714 ، ڈپٹی اسپیکر محمود جان نے ایک لاکھ 35 ہزار 735 روپے ٹیکس ادا کیا۔ خواتین ارکان اسمبلی میں سب سے زیادہ ٹیکس عائشہ نعیم نے دو لاکھ 22 ہزار 789 اور سب سے کم ٹیکس زینت بی بی نے 20 ہزار روپے جمع کرائے جب کہ کامران بنگش، ثمر بلور، شیر اعظم خان، پختون یار خان، عائشہ بانو، شگفہ ملک، شاہدہ ٹیکس جمع نہیں کرایا

اپنا تبصرہ بھیجیں