حکومت بلاخوف تحفظ بنیاد اسلام ایکٹ کا نفاذکرے، اس ایکٹ سے اہلبیت اور صحابہ کرام کی توہین کرنے والوں کیخلاف قانونی کاروائی ہو سکے گی

ملک وال (نامہ نگار)حکومت بلاخوف تحفظ بنیاد اسلام ایکٹ کا نفاذکرے، اس ایکٹ سے اہلبیت عظام علیہم السلام اور صحابہ کرام رضوان اللہ علیم اجمعین کی توہین کرنے والوں کیخلاف قانونی کاروائی ہو سکے گی ان خیالات کا اظہار بریلوی، دیوبندی اور اہلحدیث علمائے کرام نے گزشتہ روز مشترکہ پریس کانفرنس میں کیا،

اس موقع پر مولانا عبدالرحیم فاروقی (دیوبندی)، مولانا محمد ابرار محسن خطیب مرکزی جامع مسجد اوقاف (بریلوی)،مولانا اشتیاق حیدر (بریلوی)، مولانا احسان اللہ فاروقی (اہلحدیث)، مولانا توصیف احمد گوندل (دیوبندی)اور ملکوال بار ایسوسی ایشن کے سابق نائب صدر ظفر اقبال گوندل ایڈووکیٹ، مولانا جمیل احمد مرزا(دیوبندی) سمیت دیگر علمائے کرام موجود تھے

صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا عبدالرحیم فاروقی، مولانا ابرار محسن، مولانا اشتیاق حیدر، مولانا احسان اللہ فاروقی اور ظفر اقبال گوندل ایڈووکیٹ نے کہا کہ تحفظ بنیاد اسلام ایکٹ سے ملک میں فرقہ واریت کو روکنے میں مدد ملے انہوں نے کہا کہ جو شرپسند عناصر اہلبیت عظام علیہم السلام اور صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین توہین و تنقیص کر نے مسلمانوں کے مذہبی جذبات کو مجروح کرتے ہیں اس ایکٹ سے انہیں قانون کے شکنجے میں لایا جا سکے گا

علما نے کہا کہ یہ ایکٹ دراصل تحفظ ناموس اہلبیت و صحابہ ایکٹ ہے اور ہم اہلسنت بریلوی، دیوبندی اور اہلحدیث تمام مکاتب فکر کے علما اس ایکٹ کی بھرپور حمایت اور اس منظوری دے کر اس کے نفاذ کا مطالبہ کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ ملک کی بیوروکریسی میں شامل چند منفی عناصر تحفظ بنیاد اسلام ایکٹ کے نفاذ میں رکاوٹ ڈال رہے ہیں جو ناقابل برداشت ہے علمائے کرام نے کہا کہ اگر حکومت نے کسی کے دباؤ میں آ کر تحفظ بنیاد اسلام ایکٹ کا نفاذ نہ کیا تو ملک بھر میں علمائے کرام اور عوام بھرپور احتجاج کریں گے۔۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں