کئی ماہ سے سول ہسپتال پھالیہ کی رہائشی کالونی کا ٹرانسفارمر جل جانے سے رہائشی کالونی کے مکین پریشان

پھالیہ (نیوز ڈیسک ) گزشتہ کئی ماہ سے تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال پھالیہ کی رہائشی کالونی کا ٹرانسفارمر جل جانے کی وجہ سے رہائشی کالونی کے مکین پریشان ۔چیئرمین ہیلتھ کونسل نے تاحال چیک پر دستخط نہ کئے ۔

تفصیلات کے مطابق تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال پھالیہ کی رہائشی کالونی میں بجلی کا ٹرانسفارمر گزشتہ کئی ماہ سے چل چکا ہے جس کی وجہ سے عارضی طور پر ہسپتال کے ٹرانسفارمر سے کالونی کو بجلی فراہم کی گئی ہے۔اس سلسلہ میں سرکاری طور پر بنائی جانے والی ہیلتھ کونسل کے پاس بجٹ موجود ہے ۔میڈیکل سپرنٹنڈنٹ تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال پھالیہ ڈاکٹر بشریٰ چوہدری نے گیپکو پھالیہ کےحکام سے تقریبا تین لاکھ روپے مالیت کا ڈیمانڈ نوٹس تیار کرایا اور اسے حتمی منظوری کے لیے چیئرمین ہیلتھ کونسل اسسٹنٹ کمشنر پھالیہ کو بھیج دیا ۔مگر تاحال چیئرمین ہیلتھ کونسل کے دستخط نہ ہونے کی وجہ سے ٹرانسفارمر نہ لگایا جا سکا ہے ۔

یہ بھی پڑھیں: میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر بشریٰ چودھری نے گزشتہ 9 سال سے ہسپتال کے سرکاری ٹرانسفارمر سے غیر قانونی لوڈ استعمال کرنے والی فیکٹری کا کنکشن کٹوا دیا

اس سلسلہ میں میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر بشریٰ چودھری سے رابطہ کرنے پر معلوم ہوا کہ انہوں نے ٹرانسفارمر کے لئے چیک تیار کرا کر اسے حتمی منظوری کے لیے چیئرمین ہیلتھ کونسل اسسٹنٹ کمشنر پھالیہ کے پاس بھیج دیا ہے۔ہیلتھ کونسل کے ایک ممبر ڈاکٹر شکیل اقبال ڈپٹی ڈسٹرکٹ آفیسر پھالیہ بھی ہیں مبینہ طور پر ڈاکٹر شکیل اقبال نیا ٹرانسفارمر خریدنے کے حق میں نہیں اور ان کا کہنا ہے کہ تقریبا 90 ہزار روپے میں پرانا ٹرانسفارمر مرمت ہو سکتا ہے جس کی ایک منٹ کی بھی گارنٹی نہیں ہے ۔

ہسپتال کی کالونی کے مکین ٹرانسفارمر نہ ہونے کی وجہ سے شدید پریشان ہیں ۔اس سلسلہ میں جب اسسٹنٹ کمشنر پھالیہ چیئرمین ہیلتھ کونسل سے رابطہ کرنے کی کوشش کی گئی تو ان کے ریڈر کی زبانی معلوم ہوا کہ وہ ایک میٹنگ میں ہیں اور اسسٹنٹ کمشنر پھالیہ چیئرمین ہیلتھ کونسل نے گیپکو پھالیہ کے ایس ڈی او سے بات کر لی ہے اور امید ہے کہ معاملہ دو تین دن میں حل ہو جائے گا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں