باپ کا اپنی ہی سگی بیٹی کیساتھ زنا میڈیکل رپورٹ میں ثابت، جج نے لڑکی کا موقف سننے کے بعد کیس ڈسچارج کر دیا

پاہڑیانوالی(عدیل خان چوہدری) لڑکی نے الزام لگایا تھا کہ اس کا سگا باپ سالوں سے اس کے ساتھ زبردستی زناء کر رہا ہے جبکہ جج کے سامنے لڑکی نے والد کے حق میں بیان دے دیا جس کے بعد جج صاحب نے کیس ڈسچارج کر دیا۔پولیس تفتیش میں والد کو قصور وار ٹھہرایا گیا ہے جبکہ لڑکی کی میڈیکل رپورٹ میں بھی زنا ثابت ہوا ہے۔

اب اس لڑکی اور چشم دید گواہ یعنی کے والدہ صاحبہ کو سزا تو بنتی ہے۔ جنہوں نے اس قدر گھٹیا کھیل کھیلا۔ اور اس کے پیچھے ان لوگوں کو بھی سزا دی جائے جنہوں اس کھیل میں کسی بھی قسم کہ معاونت کی ہو۔

یہ بھی پڑھیں: پاہڑیانوالی: حقیقی بیٹی کیساتھ مسلسل 11سال زنا بالجبر کرنے والے درندہ صفت باپ کے خلاف بیٹی کی مدعیت میں مقدمہ درج

اگر پولیس بندہ نا پکڑتی اور کاروائی نا کرتی تو ہم نے پولیس کو لعن طعن طعن عین ثواب سمجھنا تھا، اب جبکہ ان کا راضی نامہ ہو گیا ہے تو کسی کو اس بے غیرتی پر کوئی اعتراض نہیں،

کدھر گیا اسلامی معاشرہ، کدھر گیا قانون، کہاں ہے ہیومن رائٹس اب کوئی نہیں بولے گا؟ ریاست کو ان جیسے مقدمات کا مدعی بننا چاہیئے اور ایسے گھٹیا الزام لگانے والوں کو سخت ترین سزا دے کر عبرت بنانا چایئے۔اورانہیں ضلع بدرکیاجائے

اپنا تبصرہ بھیجیں