ریسکیو 1122 نے ماہ اپریل کی کارکردگی پیش کر دی. ریسکیو کنٹرول روم میں مجموعی طور پر 30،898 فون کالز موصول ہوئیں جن میں سے 1،306ایمرجنسی کالز تھیں جبکہ 27،105 ڈسٹربنگ اور بوگس کالز تھیں

منڈی بہاﺅ الدین ( ایم بی ڈین نیوز 02 مئی 2019 ) ڈسٹرکٹ ایمرجنسی آفیسر منڈی بہاﺅالدین انجینئر عمران خان کی زیر صدارت ریسکیو 1122منڈی بہاﺅالدین کی ماہانہ کارکردگی کا جائزہ لینے کیلئے ریسکیو آفس میں اجلاس منعقد ہوا جس میں کنٹرول روم انچارج امین ندیم نے اجلاس کو ماہانہ کارکردگی کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی۔

اس موقع پر سٹیشن کوآرڈینیٹر سہیل خان، ایڈمن آفیسر ذیشان اللہ، ٹی ایم آئی شوکت رانجھا، میڈیا کوآرڈینیٹر عاطف رفیق کے علاوہ دیگرز سٹاف کے لوگ بھی موجود تھے ۔اس موقع پر اجلاس کو بتایا گیاکہ ماہ اپریل میں ریسکیو کنٹرول روم میں مجموعی طور پر 30،898 فون کالز موصول ہوئیں جن میں سے 1،306ایمرجنسی کالز تھیں۔جن پر بروقت رسپانس کرتے ہوئے متاثرین کو ایمرجنسی کور فراہم کیا گیا ۔

اجلاس کو بتایا گیا کہ 27،105 ڈسٹربنگ اور بوگس کالز،2،520 معلوماتی کالز،29رانگ کالز، 28فیک کالز کی گئیں۔ ایمرجنسی کالز کا تناسب 7.72رہا جبکہ فائر ایمرجنسیز کا تناسب 9.86رہا۔ 1،306ایمرجنسی متاثرین کو ریسکیو کیا گیا جن میں 407 روڈ ٹریفک ایکسیڈنٹ، 681 میڈیکل، 28 آگ لگنے ،40کرائم، 05ڈوبنے کے ،01عمارت منہدم ہونے جبکہ 144متفرق واقعات شامل ہیں۔ 240افراد کو موقع پر طبی امداد دے کر فارغ کیا گیا جبکہ1،098زخمیوں کو فرسٹ ایڈ دیتے ہوئے ہسپتال پہنچایا گیا۔ان متاثرہ افراد کو بہتر طبی امدادکی فراہمی کیلئے ریسکیو 1122کے تربیت یافتہ عملے کی زیر نگرانی بغیر کسی چارجز کے ہسپتالوں میں منتقل کیا گیا۔
یہ بھی پڑھیں: ریسکیو 1122 منڈی بہاوالدین نے فروری کی ماہانہ کارکردگی پیش کر دی. مجموعی طور پر 24،028 کالز موصول ہوئیں. 20،705ایمرجنسی متاثرین کو ریسکیو کیا

بریفنگ سننے کے بعد ایمرجنسی آفیسر عمران خان نے رپورٹ پر اظہار اطمینان کرتے ہوئے کہا کہ مستقبل میں بھی مذید جانفشانی اور پیشہ وارانہ انداز میں فرائض کی ادائیگی کو ممکن بنایا جائے گا۔ عمران خان نے عوام الناس سے اپیل کی کہ فری ریسکیو ہیلپ لائن 1122پر غیر ضروری کالز سے اجتناب کریں کیونکہ بڑھتی ہوئی غیر ضروری کالز انسانی جان کے ضیاع کا سبب بن سکتی ہیں کیونکہ ایمرجنسی نمبر1122مصروف ہونے کی وجہ سے ایمرجنسی کا متاثرہ شخص بروقت رابطہ نہیں کرسکتااور بروقت طبی امداد نہ ملنے کی وجہ سے جان کی بازی بھی ہار سکتا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ بڑھتے ہوئے ٹریفک حادثات کے بچاﺅ کے پیش نظر ٹریفک قوانین پر عمل کرتے ہوئے دوران ڈرائیونگ موبائل فون کے استعمال اور تیز رفتاری سے شہری اجتناب کریں اور موٹر سائیکل سوار ہیلمٹ کا استعمال کریں تو حادثات میں نمایاں کمی واقع ہو سکتی ہے۔

××××

اپنا تبصرہ بھیجیں