منڈی بہائوالدین کا اعزاز:انٹرنیشل سطح پر ملک کا نام روشن کرنا چاہتی ہوں گولڈمیڈل ایوارڈیافتہ عاتکہ جاوید

User comments

منڈی بہاء الدین: کبڈی کے مایہء ناز کھلاڑی رستم منڈی بہاء الدین ملک جاوید اختر عرف بھولا گاڈی پہلوان( مرحوم) کی7 1 سالہ صاحبزادی اور دخترمنڈی بہاء الدین عاتکہ جاوید نے قومی سطح پر ہونیوالے جوڈو کے مقابلوں میں گولڈمیڈل اپنے نام کیا جو منڈی بہاء الدین عوام کیلئے کسی اعزاز سے کم نہیں جس کے بعد ملک بھر کے متعدد اداروں کیجانب سے عاتکہ کو ملازمت کی پیشکش کی جاری ہے عاتکہ جاوید نے سہارا سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میرے پاپا مرحوم کی یہ خواہش تھی کہ ان کا بیٹا بڑا ہو کر ان کے کھیل کو جاری رکھے مگر خدا کو منظور ہی ایساتھا ہم 4 بہنوں کاایک ہی بھائی تھا جو 2 سال کی عمر میں اللہ کو پیارا ہو گیاجس کے بعد میں نے پاپا سے کہاکہ آج سے میں آپ کا بیٹا بن کر آپ کے کھیل کو جاری رکھوں گی پاپا نے10 سال کی عمر میں مجھے ٹریننگ دینا شروع کر دی اور 4سال کے بعد ہی یعنی کہ 14سال کی عمر میں مجھے پاکستان کبڈی میں سلیکٹ کر لیا گیاجو میرے اللہ پاک کی مدد اور پاپا کی محنت،انکل فاضل بٹ ،انکل خلیفہ اور انکل فرید کی سرپرستی کا نتیجہ تھا2014میں ،میں نے پنجاب یوتھ فیسٹیول میں حصہ لیاجس میں میری نمایاں پوزیشن رہی اور بعد ازاں جوڈو گیم کے کوچ محمد ذیشان بٹ نے مجھے لاہور واپڈا کمپلیکس بلایا اور جوڈو گیم کیلئے ٹرائل دینے کیلئے کہا جس میں، میں سلیکٹ ہو گئی مجھے چھ ماہ کی ٹریننگ کیلئے جوڈو کیمپ پشاور بھیج دیا گیا2ماہ ہی گزرے تھے کہ میرے والد محترم ملک جاوید اختر کی وفات ہوگئی مجھے ٹرینی کیمپ سے واپس آنا پڑابعد ازاں مجھے دوبارہ ٹرائل کیلئے لاہور بلایا گیا دوسری مرتبہ پھر میری سلیکشن ہو گئی اور مجھے اسلام آباد بھیج دیا گیا اسلام آباد میں قائد اعظم گیمز میں ،میں نے حصہ لیا اور 2لڑائیوں میں مجھے کامیابی حاصل ہوئی اور مجھے گولڈ میڈل سے نوازا گیا میں اپنے کوچز محمد ذیشان بٹ ، سر لیاقت ، سر سنی کی انہتائی مشکور ہوں نے جنہوں میری کامیابی لےئے مجھے اچھے کھیل کا مظاہرہ کرنے کیلئے ٹریننگ دی اور میری کامیابی میں میری فیملی سمیت خصوصاً والدہ محترمہ کی دعائیں بھی شامل رہیں جس پر میں اللہ رب العزت کی بے حد مشکور ہوں اب میری یہ خواہش ہیکہ بین الاقوامی سطح پر اچھے کھیل کا مظاہرہ کر کے اپنے ملک کا نام روشن کروں۔۔۔

User comments

اپنا تبصرہ بھیجیں