پولیس با اثر ملزمان کے خلاف کاروائی نہیں کر رہی،بیٹی کو بازیاب کروایا جائے،متاثرہ ماں کا احتجاج

Shumaila bibi's family protestingملک وال(نامہ نگار) پولیس با اثر ملزمان کے خلاف کاروائی نہیں کر رہی ، بیٹی کو بازیاب کروایا جائے متاثرہ ماں کی پریس کلب کے سامنے دہائی تفصیلات کے مطابق مڈھ موڑ کی رہائشی تعظیم بی بی بیوہ مختار نے اپنی بیٹیوں اور بہنوں کے ہمراہ پریس کلب کے باہر احتجاج کرتے ہوئے صحافیوں کو بتایا کہ میری 19سالہ بیٹی شمائلہ جو کہ شادی شدہ ہے اور میرے 4دن کے لیے میرے پاس آئی ہوئی تھی گھر کے پاس دکان سے سامان لینے گئی تو ملزمان یعقوب خان ولد قاسم خان اور ساتھ 2کس نامعلوم سفید رنگ کی کرولا کار میں اغوا ء کر کے لے گئے جنہیں اہلیان محلہ شاہد ولد کالے خان، محمد اشرف بلوچ نے شمائلہ بی بی کی اغوا کرتے ہوئے خود دیکھا اور گاڑی روکنے کی کوشش بھی کی مگر ملزمان میری بیٹی کو اغوا کر کے لے گئے بیوی تعظیم بی بی نے الزام لگایا کہ پولیس تھانہ میانی کو 6جو ن 2016کو ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرنے کے لیے درخواست گزاری مگر تاحال پولیس نے مقدمہ درج نہ کیا اور مقامی با اثر سیاسی شخصیات ہمیں ڈرانے دھمکانے لگے ہیں اور درخواست واپس لینے کے لیے دباؤ ڈال رہے ہیں مغویہ شمائلہ کی والدہ تعظیم اور اس کی بہنوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب سے انصاف کی اپیل کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہماری بیٹی کو بازیاب کروا کر اغوا کاروں کے خلاف سخت قانونی کاروائی کی جائے۔۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں