نیشنل ایکشن پلان کے نفاذ پر سنجیدگی نظر نہیں آتی ، دہشتگردی، انتہا پسندی اور فرقہ واریت کا خاتمہ یقینی بنایا جائے

naqvi
ملک وال(نامہ نگار) نیشنل ایکشن پلان کے نفاذ پر سنجیدگی نظر نہیں آتی ، دہشتگردی، انتہا پسندی اور فرقہ واریت کا خاتمہ یقینی بنایا جائے ان خیالات کا اظہار تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے سربراہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے گزشتہ روز یہاں میڈیا کے نمائندوں کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں آئین کو نظر انداز اور قانون کی دھجیاں اڑا کر اسے تباہ کیا گیا لیکن کسی بھی حکمران نے آج تک ستعفیٰ نہیں دیا۔ پانامہ لیکس کے معاملے پر وزیر اعظم کے استعفیٰ کے حق میں نہیں لیکن اس کی شفاف تحقیقات کے بعد کرپشن کرنے والوں کیخلاف کاروائی ہونی چاہئے۔ علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہا کہ پنجاب میں مجالس عزا کے انعقاد پر مقدمات درج کئے گئے شرپسند عناصر اس طرح فتنوں کو ہوا دے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ملک میں قانون پر عملدرآمد نہ ہونے کے باعث بااثر افراد اس کے شکنجے سے نکل جاتے ہیں جبکہ صرف کمزوروں کو سزا دی جاتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکمران ملک کی تہذیب و ثقافت سے نابلد ہیں یہی وجہ ہے کہ آئے روز اسلام سے متصادم سیکولر مزاج کے قوانین بنانے کی کوشش کی جاتی ہے لیکن مذہبی جماعتوں نے اس حوالے سے اپنی آرا حکومت کو دیدی ہیں۔ اس موقع پر علامہ امیر حیدر قمی، ملک محمد افضہ سید ساجد علی نقوی نے کہا کہ پنجاب میں مجالس عزا کے انعقاد پر مقدمات درج کئے گئے شرپسند عناصر اس طرح فتنوں کو ہوا دے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ملک میں قانون پر عملدرآمد نہ ہونے کے باعث بااثر افراد اس کے شکنجے سے نکل جاتے ہیں جبکہ صرف کمزوروں کو سزا دی جاتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکمران ملک کی تہذیب و ثقافت سے نابلد ہیں یہی وجہ ہے کہ آئے روز اسلام سے متصادم سیکولر مزاج کے قوانین بنانے کی کوشش کی جاتی ہے لیکن مذہبی جماعتوں نے اس حوالے سے اپنی آرا حکومت کو دیدی ہیں۔ اس موقع پر علامہ امیر حیدر قمی، ملک محمد افضل، سبط حسنین اور دیگر رہنما بھی موجود تھے۔ علامہ سید ساجد علی نقوی نے گرین ٹاؤن میں جشن ظہور غازی عباس کی تقریب سے خطاب کیا ۔۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں