گیپکو کی طرف کیمرہ ریڈنگ کے باوجود بجلی بلوں میں شہریوں کو اضافی یونٹس ڈال کر لوٹنے کا سلسلہ جاری

bijli loadsheding meter
ملک وال(نامہ نگار) گیپکو کی طرف کیمرہ ریڈنگ کے باوجود بجلی بلوں میں شہریوں کو اضافی یونٹس ڈال کر لوٹنے کا سلسلہ جاری ، وزیر اعظم نوٹس لے کر اس لوٹ مار کو روکیں انجمن تحفظ حقوق شہریاں ۔ تفصیلات کیمطابق گیپکو نے بجلی کے بلوں میں اضافی یونٹس ڈالنے کے عمل کو روکنے کیلئے میٹرز کی کیمرہ ریڈنگ کا سلسلہ شروع کیا تھا جس سے صارفین کے میٹرز کی ریڈنگ بجلی کے بل پر آجاتی ہے تاکہ صارفین کو معلوم ہو کہ ان کی ریڈنگ کیا ہے۔ لیکن اس کے باوجود صارفین سے شکایت کی ہے کہ انہیں اب بھی اضافی یونٹس ڈالے جا رہے ہیں ۔ ایک صارف چوہدری خاور نے بتایا کہ میٹر ریڈر نے رواں ماہ میرے سامنے ریڈنگ کی جو میں نے بھی نوٹ کی لیکن جب بل آیا تو 79یونٹس زائد ڈالے گئے چوہدری خاور نے بتایا کہ انہوں نے متعلقہ میٹر ریڈر کو شکایت کی تو اس نے کہا کہ میں یونٹس ٹھیک لکھی تھیں اضافی یونٹس اوپر سے لگ کر آئیں ہیں۔ایک اور صارف شوکت علی نے الزام عائد کیا کہ گیپکو کے کئی افسران اور اہلکار بجلی چوری کرواتے ہیں اور پھر اس کا بل عام صارفین پر ڈال دیا جاتا ہے۔ دیگر متعدد صارفین نے بھی اضافی یونٹس ڈالنے پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے وزیر اعظم میاں نواز شریف سے مطالبہ کیا کہ وہ عوام کو گیپکو کی اس لوٹ امر سے بھی بچائیں اور اضافی یونٹس ڈالنے کے ذمہ دار افسران کیخلاف کاروائی کریں رابطہ کرنے پر گیپکو ترجمان نے کہا کہ کیمرہ ریڈنگ کے بعد اضافی یونٹس کی شکایات میں نمایاں کمی ہوئی ہے آنے والی شکایات کو بھی دیکھ رہے ہیں۔۔۔۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں