چک نظام کے مقام پر وکٹوریہ برج پر نوجوان موٹر سائیکل سمیت دریا میں گرکر جاں بحق

Chak nizam victoria bridge
ملک وال(نامہ نگار) چک نظام کے مقام پر موجود تاریخی وکٹوریہ ریلوے پل جس کے دونوں اطراف میں انگریز دور میں پیدل چلنے والوں کے لیے لکڑی کے پٹھے ڈال کر ٹریک بنائے گئے تھے انگریزوں کے بعد ریلوے حکام نے وکٹوریہ پل کی دیکھ بھال نہ کی جس کے باعث کئی دہائیوں سے استعمال ہونے لکڑی پشتے ٹوٹ گئے اور پھٹوں کے درمیان شگاف پڑ گئے جنہیں بارہا دفعہ پرنٹ میڈیا اور الیکٹرانک میڈیا پر دکھایا بھی گیا مگر ریلوے حکام ٹس سے مس نہ ہوئے ریلوے پل پر ٹوٹے ہوئے پشتوں کی مرمت کرنے کی بجائے پل کے دونوں اطراف میں وال چاکنگ کر دی گئی کہ ریلوے پل کے پھٹے ٹوٹ چکے ہیں ریلوے حکام کی نااہلی کی بھینٹ چڑھنے والا نوجوان شکیل آج مزدوری کے سلسلہ میں چک نظام ریلوے پل کراس کر رہا تھا کہ پشتوں میں پڑے شگاف اور سینکڑوں سال پرانے کمزور ہوجانے والے پھٹے کے ٹوٹنے کی وجہ سے موٹر سائیکل سمیت دریائے جہلم میں گر کر فوت ہو گیا موقع پر موجود ملاحوں نے متوفی کی میت دریا سے نکال لی اور ورثا ء کے حوالے کر دی شہریوں نے وزیراعظم پاکستان سے مطالبہ کیا کہ ریلوے حکام کی غفلت کے باعث کے ڈی ایس ریلوے اور مقامی افسران کے خلاف شکیل نوجوان کے قتل کا مقدمہ درج کروا ئیں اورغفلت کے زمہ داران کو جیل بھجوائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں