1986 سے قاتم گورنمنٹ کامرس کالج پھالیہ30سال سے سرکاری عمارت سے محروم

load sheding education teacher
ملک وال(نامہ نگار) گورنمنٹ کامرس کالج پھالیہ30سال سے سرکاری عمارت سے محروم، تین دہائیوں سے اراکین قومی وصوبائی اسمبلی کے وعدے بھی محض سیاسی ثابت ہوئے، عرصہ دراز سے ہیلاں روڈ پر کالج کی زمین تو حاصل کر لی گئی لیکن فنڈز کی عدم دستیابی کے باعث تعمیر نہ ہو سکی ۔ تحصیل پھالیہ کے شہریوں اور سماجی تنظیموں کا وزیر اعلیٰ پنجاب، ڈی سی او منڈی بہاؤالدین اور ایم پی اے سید طارق یعقوب رضوی سے فوری فنڈز ریلیز کروا کر کالج کی تعمیر شروع کروانے کا مطالبہ۔ تفصیلات کیمطابق پھالیہ میں نوجوانوں کو فنی تعلیم سے آراستہ کرنے کیلئے 1986 میں گورنمنٹ کامرس کالج قائم کیا گیا لیکن 30گذر سال جانے کے باوجود تا حال کالج کی سرکاری عمارت تعمیر نہیں کی گئی جس کی وجہ سے کالج تین دہائیوں سے کرایہ کی عمارتوں میں در بدر کی ٹھوکریں کھا رہا ہے۔ مذکورہ کالج کامرس کی تعلیم کے حوالہ سے پھالیہ میں ایک مثالی تعلیمی ادارہ کہ جس سے فارغ تحصیل ہونے والے طلباء اعلیٰ عہدوں پر تعینات ہو کر اپنے اہل خانہ کا پیٹ پالنے کے ساتھ ملک و قوم کی خدمت میں اپنا بھر پور کردار ادا کر رہے ہیں، سماجی تنظیموں اور شہریوں تنویر حسین صابر، میاں امجد، مرید کاظم جعفری، سجاد عمران، مرزا قیصر فاروق، سجاد چشتی اور شجاع حسین بھٹی نے کہا کہ ایسے تعلیمی اداروں کو نظر انداز کرنا سراسر زیادتی کے مترادف ہے، انہوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف، ڈی سی او منڈی بہاؤالدین مظفر خان سیال اور ایم پی اے سید طارق رضوی سے مطالبہ کیا ہے کہ گورنمنٹ کامرس کالج پھالیہ کی عمارت کے لئے بلا تاخیر فنڈز جاری کروا کر اس کی تعمیر شروع کروائی جائے۔۔۔۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں