تعلیمی بورڈ کے عملہ کی طرف سے نویں جماعت کی طالبہ کی رولنمبرسلپ پر کسی اور طالبہ کی تصویر لگا دی گئی

Education exam students
تعلیمی بورڈ کے عملہ کی طرف سے نویں جماعت کی طالبہ کی رولنمبرسلپ پر کسی اور طالبہ کی تصویر لگا دی گئی،سپرنٹنڈنٹ نے بچی کو کمرہ امتحان میں بیٹھنے کی اجازت نہ دی،ہماری بیٹی کا سال ضائع کر دیا گیا ہے ،عدالت ہیڈمسٹریس اور سپرنٹنڈنٹ کے خلاف کاروائی کرے،والدین نے ایڈیشنل سیشن جج کی عدالت میں رٹ دائر کر دی،ہمارا کوئی قصور نہیں غلطی والدین اوربورڈ والوں کی ہے ہیڈ مسٹریس کا موقف۔
ملک وال(نامہ نگار) محلہ فضل آباد کے رہائشی سکھا خان نے میڈیا کو بتایا کہ ہماری بیٹی مریم نازگورنمنٹ گرلز ہائی سکول ملکوال میں نہم جماعت کی طالبہ ہے اور ہم نے بچی کے داخلہ کے حوالہ سے سکول انتظامیہ کو بچی کی اصل تصاویر دی تھیں مگر رولنمبر سلپ پر کسی اور بچی کی تصویر لگا دی گئی ہم نے ہیڈ مسٹریس کو امتحان سے قبل اس بارے بتایا مگر سکول انتظامیہ کی طرف سے ہمیں تسلی تو دے دی گئی لیکن 19.3.16 کو جب ہماری بیٹی انگلش کا پیپر دینے کے لئے گورنمنٹ گرلز کالج سنٹر کے کمرہ امتحان پہنچی تو سپرنٹنڈنٹ نے اسے بیٹھنے نہیں دیا اور اس طرح گزشتہ روز ہونے والا بائیالوجی کاپیپر بھی بچی کو نہیں دینے دیا گیاجس سے ہماری بچی کا سال ضائع ہو گیا ہے۔سکھا خان نے بتایا کہ ہم نے ایڈیشنل سیشن جج ملکوال کی عدالت میں ہیڈمسٹریس،کلاس ٹیچر اور سپرنٹنڈنٹ کے خلاف رٹ کر دی ہے ۔اس حوالہ سے ہیڈ مسٹریس کا کہنا تھا بچی کے ڈاکومنٹس ہمیں بروقت نہیں ملے جوں ہی ملے ہم نے بار بار بورڈ میں اپنا بندہ بھیجا مگر بورڈ والوں نے مسئلہ حل نہیں کیا ہمار ا ا س میں قصور نہیں ہے۔ڈپٹی کنٹرولر گوجرانوالہ تعلیمی بورڈ نثار بزمی سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ سکول انتظامیہ کا قصور ہے انکے خلاف کاروائی ہونی چاہئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں