چوٹ دھیراں میں رات گئے سولہ افراد کی طرف سے ڈکیتی کی واردات،5 تولے سونا و نقدی لوٹ لئے

Chot Dheran
نواحی گاؤں چوٹ دھیراں میں رات گئے سولہ افراد کی طرف سے ڈکیتی کی واردات،اہل خانہ کو یرغمال بنا کر ملزمان 5 تولے سونا دو لاکھ روپئے کی نقدی لوٹ کر فرار،چھ ملزمان پولیس کی وردی میں ملبوس تھے،تاحال مقدمہ درج نہ ہو سکا
ملک وال(نامہ نگار) چوٹ دھیراں کے رہائشی بشیر احمد ولد محمد نذیر نے پولیس تھانہ ملکوال میں درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ مورخہ سولہ اور سترہ مارچ کی درمیانی رات وہ اپنے دوست کو ائرپورٹ چھوڑنے گیا ہو اتھا کہ رات تقریباً 11 بجے سولہ کے قریب افرادآتشیں اسلحہ کے ہمراہ بیرونی دیوار پھلانگ کرمیرے گھر داخل ہوئے اور سوئے ہوئے میرے اہل خانہ کو جگا کر اسلحہ کی نوک پر یرغمال بناتے ہوئے ایک کمرے میں بند کر دیا اور دیگر تین کمروں کے تالے توڑ کر 5 طلائی زیور،دو لاکھ روپئے نقد اورفیٹ ٹریکٹر 480 کے اصل کاغذات لیتے ہوئے اور اہل خانہ کو گالم گلوچ اور دھمکیاں دیتے ہوئے فرار ہو گئے۔بشیر احمد کا یہ بھی کہنا تھا کہ 6 ملزمان نے پولیس کی وردیا ں پہن رکھی تھیں جب اہل خانہ کے شور مچانے قریبی رشتہ دار ممتاز احمد،نصراﷲ وغیرہ جاگ گئے تو انہوں نے ملزمان کو کیری ڈبہ اور کار میں سوار ہوتے دیکھا تو ملزمان میں 12 نامعلوم افراد کے علاوہ شبیر احمد،محمد نعیم سکنہ بنیاں تحصیل کھاریاں،منگے خان سکنہ چک سجاول،اورنگزیب گجرات بھی شامل تھے۔بشیر احمد نے بتایا کہ پولیس تھانہ ملکوال میں ملزمان کے خلاف کاروائی کی درخواست دی ہے مگر تاحال مقدمہ درج نہیں ہوا۔اس حوالہ سے تھانہ ملکوال میں بات کی گئی تو محرر شیراز نے بتایا کہ کاروائی جاری ہے جلد میڈیا کو بتائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں