اسسٹنٹ کمشنر ملکوال نے اراضی ریکارڈ سنٹر ملکوال کا افتتاح کر دیا،شفقت محمود گوندل مہمان خصوصی

Land Record Malakwal news
ملک وال(نامہ نگار) اراضی ریکارڈ سنٹر ملک وال کی افتتاحی تقریب ٹی ایم اے حال میں زیر صدارت اسسٹنمٹ کمشنر ملک وال منعقد ہوئی جس کے مہمان خصوصی شفقت محمود گوندل ایم پی اے اور کثیر علاقہ میں اہلیان علاقہ نے شرکت کی تقریب کے بعد ایم پی اے اور اسسٹنٹ کمشنر کا دورہ اراضی کمپیوٹر سنٹر ایم پی اے نے لائن میں کھڑے ہو کر فرد جاری کروایا سنٹر پر موجود لوگوں کی شکایات سن کر فوری طور پر ازالہ کے احکامات جاری کیے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ارضی ریکارڈ سنٹر کے انچارج سید ضیغم عباس شاہ نے کہا کہ بہت مشکل مرحلہ تھا 150سال پرانا ریکارڈ کمپیوٹرائز ڈ کرنا بہت بڑا معمہ تھا انہوں نے کہا تحصیل ملک وال میں کل 84مواضعات شامل ہیں جن میں سے انتھک محنت کر کے 79مواضعات کا ریکارڈ آن لائن کر دیا گیا لاکھوں اغلاط کو درست کیا گیا اور 450سے زائدکھیوٹوں کو درست کر کے 250کھیوٹوں کو بند کر دیا گیااب عوام الناس صرف 50منٹ میں انتقال اور 30منٹ میں فرد حاصل کر سکیں گے اور اس سلسلہ میں بد عنوانی کے سد باب کرنے کے لیے مالکان اور حقداران کے حقوق کا تحفظ یقینی اراضی ریکارڈ تک بذریعہ انٹر نیٹ ہر عام و خاص کی رسائی خواتین اور بزرگ شہریوں کے لیے الگ کاؤنٹرز کا انعقاد اورQ.MANAGMENTکے ذریعے بلا تفریق ٹوکن کا اجرا شامل ہیں اور عوامی شکایات کے ازالہ کے لیے خصوصی شکایات سیل اور فری کال کا کی سہولت کے ساتھ ساتھ اراضی ریکارڈ سنٹر پر مانیٹرنگ کے لیے کیمرہ جات کے زریعے مانیٹرنگ سسٹم وضع کر دیا گیا ہیہے اس سسٹم سے جہاں عوام کئی کئی دن پٹواریوں پاس اپنے فردات اور انتقال کے لیے پریشان ہوتے تھے اب 30منٹ میں اراضی ریکارڈ سنٹر سے اپنا فرد اور سرکاری فیس بنک میں جمع کروانے کے بعد انتقال حاصل کر سکتے ہیں انچارج اراضی سنٹر سید ضیغم عباس شاہ کا کہنا تھا قومی خزانے میں ماہانہ فردات کی اوسط فیس 250000روپے صاف شفاف طریقے سے جمع ہو رہی ہے اسسٹنٹ کمشنر آصف رضا نے دوران خطاب کہا تحصیل ملک وال کل مواضعات کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ کرنے میں پوری ٹیم نے دن رات ٹی ایم اے حال میں بیٹھ کر کھیوٹوں اور کھتونیوں کے ریکارڈ سیدھے کیے یہ بہت مشکل مرحلہ تھا مگر اب حق دار کو اس کا حق واپس مل رہا ہے عام آدمی پراپرٹی کے حقوق سے یکساں مستفید ہونگے انہوں نے کہا شرارتیوں سے محفوظ ہونے کے لیے کمپیوٹرائزڈ انتقال کی ایک کاپی سنٹر پر ایک کاپی پٹواری کے پاس اور ایک کاپی مین سرور میں بیک اپ کے طور پر محفوظ رہے گی اسسٹنٹ کمشنر کا کہنا تھا کہ تحصیلدار پٹواری ٹی ایم او اور تمام عملہ کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں جنہوں نے اس کارنامہ کو سرانجام دینے کے لیے دن رات ایک کر دیا مہمان خصوصی ایم پی اے شفقت محمود گوندل نے اپنے خطاب میں کہا کہ ورلڈ بنک اور حکومت پنجاب کا مشترکہ اراضی ریکارڈ سنٹرز کا قیام پنجاب کی 143تحصیلوں میں قائم کر دیا گیا اور اور پنجاب بھر کے ریکارڈ کو کمپیوٹرائزڈ کرنے کے لیے کروڑوں صفحات کو سکین کیا گیا اور یہ خادم اعلیٰ پنجاب کی حب الوطنی کا ثبوت ہے کہ ایسا کارنامہ جو کا خالصتاً زمینداروں کے لیے وبال جان تھا اس کا تدراک کیا اور اس نظام کے تحت کوئی بھی بد عنوانی نہیں ہو سکتی اور بالخصوص اس نظام کے تحت ہماری مائیں بہنیں اپنے پراپرٹی کے حصہ میں باعزت طریقے سے اپنے مالکانہ حقوق حاصل کر سکتی ہیں اس کے بعد ایم پی اے اور اسسٹنٹ کمشنر نے اراضی ریکارڈ سنٹر کا دورہ کیا ایم پی اے نے خود فرد جاری کروا کر سارے طریقے سے آگاہی حاصل سنٹر پر موجود لوگوں کی سنٹر کے بارے میں رائے بھی لی گئی۔۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں