غازی ممتاز شہید کی پھانسی کیخلاف مذہبی تنظیموں کے کارکنوں کی ملکوال پریس کلب تک احتجاجی ریلی

protest against mumtaz qadri in malakwal news
غازی ممتاز شہید کو پھانسی دیے جانے کیخلاف مذہبی تنظیموں کے کارکنوں کی مرکزی جامع مسجدسے پریس کلب تک احتجاجی ریلی، وزیر اعظم نواز شریف اور وزیر اعلیٰ شہباز شریف کیخلاف شدید نعرہ بازی ، توہین رسالت کیس میں قید آسیہ کو عدالتی فیصلہ کیمطابق بلاتاخیر پھانسی دینے کا مطالبہ۔
ملک وال(نامہ نگار) تفصیلات کیمطابق گزشتہ روز نماز جمعہ کے بعد مرکزی جامع مسجد سے انجمن غلامان پیر سیال، بزم ضیا ء الامت ، سنی علما کونسل اور انجمن طلبا اسلام کی اپیل پر غازی ممتاز شہید کو پھانسی دیے جانے کیخلاف احتجاجی جلوس نکالا گیا ۔ جلوس شہر کے مختلف راستوں سے ہوتا ہوا پریس کلب کے سامنے پہنچا جہاں مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے علامہ محمد اسلم رضوی، علامہ محمد اشرف چشتی ، علامہ محمد آصف جاوید ، علامہ بشیر احمد سیالوی ، علامہ صفدر حسین گیلانی اور دیگر علما ئے کرام نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کلمہ طیبہ کے نام پر عاشق رسول کو پھانسی دے کر حکمرانوں نے ثابت کیا کہ وہ یزیدی کردار کے حامل امریکی اور یورپین آقاؤں کے غلام ہیں انہوں نے کہا کہ توہین رسالت کی مرتکب آسیہ جسے عدالت نے جرم ثابت ہونے پر سزائے موت سنا رکھی ہے وہ ابھی تک زندہ ہے جبکہ اس کی حمایت کرنے والا سابق گورنر اور اسے قتل کرنے والا عاشق رسول دنیا سے جا چکے ہیں ۔ مقررین نے کہا کہ میاں نواز شریف ، میاں شہباز شریف اورممنون حسین اﷲ کریم، رسول اکرم ﷺ اور مسلم قوم کے مجرم ہیں ۔ مظاہرین نے حکومت کیخلاف شدید نعرہ بازی کی اور عہد کیا کہ وہ آئندہ ن لیگ کو ووٹ نہیں دیں گے۔۔۔۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں