دریائے جہلم پر پل کی تعمیر نہ ہونے سے شہر کی تجارتی منڈی معاشی بدحالی کا شکار،تعمیر بلاتاخیر کی جائے

vectoria bridge jehlum bridge malakwal PD Khan bridge
ملک وال(نامہ نگار)دریائے جہلم پر پل کی تعمیر نہ ہونے سے شہر کی تجارتی منڈی معاشی بدحالی کا شکار ہے یہ پل تین اضلاع کو ملاسکتا ہے اس تعمیر بلاتاخیر کی جائے ان خیالات کا اظہار سابق ناظم سٹی ملک عبدالرشید ٹھیکیدار نے گزشتہ روز صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ چک نظام کے مقام پر دریائے جہلم پر ٹریفک کی تعمیر ملک وال اور پنڈدادنخان کی لاکھوں عوام کا تین دہائی پرانا مطالبہ ہے ۔ سابق ناظم سٹی ملک عبدالرشید ٹھیکیدار نے کہا کہ جب ریلوے ٹرینوں کا نظام ٹھیک تھا اس وقت ملک وال کی تجارتی منڈی کافی خوشحال تھی جبکہ تین اضلاع منڈی بہاؤالدین ، جہلم اور سرگودھا کے لاکھوں شہری تجارت اور سفری سہولت سے مستفید ہوتے تھے لیکن ریلوے بحران کے بعد ملک وال سے پنڈدادنخان کے درمیان ٹرین سروس بند ہو گئی جس سے آمدورفت بھی ختم ہونے سے نہ صرف ملک وال کی تجارتی منڈی بدحالی کا شکار ہو گئی کاروبار مندے ہو گئے جس کی وجہ سے کئی تاجر کاروبار سمیت دوسرے شہروں میں ہجرت کر گئے انہوں نے کہا کہ سریائے جہلم پر پل کا افتتاح دو سابق صدور مملکت، سابق وزیر اعظم اور سابق وزیر اعلیٰ کر چکے ہیں لیکن پل بننا تو دور کی بات اس کی تعمیر بھی شروع نہ ہو سکی۔ ملک عبدالرشید نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے سابق دور حکومت میں اس وکٹوریہ ریلوے پل پر سڑک بچھانے کا ٹینڈر ہو گیا فنڈز بھی دے دیے گئے لیکن بدقسمتی سے یہ پراسیس جنرل الیکشن کے قریب ہونے کی وجہ سے الیکشن کمیشن کی ہدایت پر پل کی تعمیر کا کام روک دیا گیا تاہم الیکشن کے بعد ن لیگ کی حکومت بننے پر یہ عوام دوست منصوبہ نظر انداز کر دیا گیا ۔ سابق سٹی ناظم نے کہا کہ اب ملک وال اور پنڈدادنخان میں تمام اراکین اسمبلی کا تعلق مسلم لیگ ن سے ہے لیکن اس کے باوجودپل کی تعمیر نہ ہونا سمجھ سے بالا ہے ۔ انہوں نے دونوں تحصیلوں کے اراکین اسمبلی سے مطالبہ کیا کہ وہ عوام کے اس دیرینہ مطالبہ کو پورا کرتے ہوئے پل کی تعمیر فوری طور پر شروع کروائیں۔۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں