مصطفائی سکول انتظامیہ کی نااہلی کی وجہ سے نہم و دہم کلاس کے بیشتر طلباء کا ایک سال ضائع

Mustafai Secondary science school malakwal news
ملک وال(نامہ نگار) مصطفائی سائنس سیکنڈری سکول کے نہم و دہم کلاس کے طلباء سکول انتظامیہ کے خلاف سراپہ احتجاج،3500روپے فی طالبعلم فیس برائے داخلہ بورڈ امتحانات وصول کرنے کے باوجود سکول انتظامیہ نے ہمارے داخلے نہیں بھیجے سکول انتظامیہ کی غفلت کے باعث 60طالبعلموں کا قیمتی تعلیمی سال ضائع ہو گیا ،طالبعلموں کی کارکردگی بہتر نہ ہونے کیوجہ سے داخلے نہیں بھجوائے گئے وائس پرنسپل ملک فیاض کا موقف تفصیلات کے مطابق مصطفائی سیکنڈری سائنس سکول ملک وال کے طالبعلموں نے آج میڈیا کے نمائندوں اپنے سکول کے گیٹ کے سامنے کھڑے ہو کر الزام عائد کیا کہ ان کے ساتھ سکول انتظامیہ نے نہم اور دہم جماعت کے 60طلباء سے سالانہ امتحانات کے لیے بورڈ میں داخلے بھیجنے کے لیے فی طالبعلم 3500روپے فیس وصول کی مگر 3مارچ کو شروع ہونے والے امتحانات کے لیے جب سکول انتظامیہ سے رولنمبر سلپیں مانگی گئیں تو پتہ چلا کہ ہمارے داخلے ہی نہیں بھجوائے گئے جس پر تمام طالبعلموں اور والدین کو تشویش ظاہر ہوئی اور تمام طالبعلموں نے سکول انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ ہمیں رولنمبر سلپس دی جائیں ورنہ ہم امتحانات میں نہیں بیٹھ سکیں گے جس پر سکول انتظامیہ کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگی،طالبعلموں نے مقامی میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ہمارے ساتھ سکول انتظامیہ کی جانب سے سخت زیادتی کی گئی ہے ہمارے داخلے نہ بھیج کر ہمارا قیمتی تعلیمی سال ضائع کر دیا گیا ہے سکول انتظامیہ نے اگر کارکردگی کی بناء پر داخلے نہیں بھیجنے تھے تو وقت سے پہلے تحریری طور پر ہمارے والدین کو آگاہ کر دیتے تاکہ ہم پرائیویٹ طور پر داخلے بھیج کر امتحانات میں بیٹھ سکتے مگر اب 3مارچ کو امتحانات شروع ہونے کو ہیں اور اب ہمارے پاس کوئی راستہ نہیں جس کے ذریعے ہم امتحانات میں بیٹھ سکیں طالبعلموں نے بتایا کہ ہم نے تحریری طور پر صوبائی محتسب کو درخواستیں دے دی ہیں، طالبعلموں نے وزیراعلیٰ پنجاب اور ڈی سی او ،ای ڈی او ایجوکیشن منڈی بہاوالدین سے مطالبہ کیا سکول انتظامیہ کے خلاف اس بدسلوکی اور بچوں کے مستقبل سے کھیلنے اور تعلیمی سال ضائع کرنے پر سخت سے سخت کاروائی کریں اور ہمیں امتحانات میں بیٹھانے کے لیے بورڈ انتظامیہ کو احکامات جاری کرکے ہمیں امتحانات میں بیٹھا کر ہمارا تعلیمی سال اور مستقبل تباہ ہونے سے بچائیں۔۔۔۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں