کارکردگی دکھا رہا ہوں، اب بورڈ اور سلیکٹرز سوچیں’

56af9c74e8a1b

دبئی: قومی کرکٹ ٹیم کے وکٹ کیپر بلے باز نے پاکستان سپر لیگ(پی ایس ایل) میں شاندار کارکردگی دکھانے کا عزم ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ قومی ٹیم میں ان کی سلیکشن کے بارے میں سوچنا پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی) اور سلیکٹرز کا کام ہے۔

پاکستان سپر لیگ کا آغاز چار فروری سے ہو گا جہاں وکٹ کیپر بلے باز پشاور زلمی کی فرنچائز کی نمائندگی کریں گے۔

کامران اکمل نے آخری مرتبہ 204 کے ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں پاکستان کی نمائندگی کی تھی تاہم حالیہ ڈومیسٹک سیزن میں نیشنل ون ڈے ٹورنامنٹ میں 576 رنز کے ساتھ وہ سب سے کامیاب بلے باز رہے تھے اور اس کارکردگی کی بدولت وہ ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کیلئے سلیکٹرز کی نظروں میں آگئے ہیں۔

پشاور زلمی کے ساتھ پریکٹس کے دوران میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کامران اکمل نے کہا کہ تمام کھلاڑیوں میں بہت جوش و خروش ہے، وقت زیادہ نہیں ہوا ہے لیکن ٹیم مینجمنٹ اور کوچز کوشش کر رہے ہیں کہ جتنا وقت ملے اس کو کارآمد بنائیں اور ٹیم کی بہترین تیاریوں کیلئے کام کریں گے۔

وکٹ کیپر بلے باز نے پاکستان سپر لیگ کو ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں قومی ٹیم میں انتخاب کیلئے نادر موقع قرار دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ یقیناً تمام کرکٹرز خصوصاً نوجوان کھلاڑیوں کو پی ایس ایل کا بہت فائدہ ہو گا، انٹرنیشنل کرکٹرز کے ساتھ ڈریسنگ روم شیئر کرنے کا بہت مثبت اثرات مرتب ہوتے ہیں، دنیا کی جس لیگ میں بھی انٹرنیشنل کھلاڑیوں نے شرکت کی وہاں کھیل کے معیار میں واضح بہتری آئی ہے کھلاڑیوں میں پروفیشنلزم آ جاتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہر کسی کیلئے اچھا موقع پو گا کہ وہ پی ایس ایل میں کارکردگی دکھا کر ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کیلئے قومی ٹیم میں جگہ بنائے، پی ایس ایل سے چند دن قبل ڈومیسٹک کرکٹ ختم ہوئی ہے اور اس میں چند کھلاڑیوں نے اچھی کارکردگی دکھائی اور انشا اللہ اچھی کارکردگی دکھا کر ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کیلئے قومی ٹیم میں جگہ بنانے کی کوشش کروں گا۔

قومی ٹیم میں سلیکشن کے حوالے سے سوال پر کامران اکمل نے کہا کہ میں نے ہمیشہ 100 فیصد کارکردگی دکھانے کی کوشش کی اور صرف اسی سیزن میں ہی نہیں بلکہ گزشتہ دو سیزن میں بھی اچھی کارکردگی دکھائی۔ میرا کام فٹنس اور فارم کو ثابت کرنا ہے اور ٹیم میں سلیکشن کے بارے میں سوچنا بورڈ اور سلیکٹرز کا کام ہے۔

انہوں نے کہا کہ میری کوشش ہو گی کہ اپنی ڈومیسٹک کرکٹ کی فارم برقرار رکھتے ہوئے پشاور زلمی کی ٹیم کو کامیابی سے ہمکنار کرانے میں اہم کردار ادا کروں۔

انہوں نے مزید کہا کہ پورے پاکستان کی دعاؤں سے پی ایس ایل کو کامیاب بنانے کی ہرممکن کوشش کریں گے، اس لیگ کو پانچ چھ سال پہلے ہونا چاہیے تھا لیکن ابھی بھی اس کے انعقاد پر بہت خوشی ہے۔

اپنی ٹیم پشاور زلمی کے حوالے سے وکٹ کیپر بلے باز نے کہا کہ ٹیم کا کامبی نیشن بہت اچھا ہے، مقامی ہوں یا انٹرنیشنل کھلاڑی، سب کھیلتے ہوئے آ رہے ہیں اور پریکٹس میں ہیں، باؤلنگ اور بیٹنگ میں ہماری ٹیم کا بہت اچھا کامبی نیشن ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں