علما ء اور دانشوروں کو چا ہیے کہ نو جوانوں کی برین واشنگ کے ذریعے قومی تعمیر میں اپنا کر دار ادا کریں

Survey exam marking paper checking

ملک وال(تحصیل رپورٹر)علما ء اور دانشوروں کو چا ہیے کہ نو جوانوں کی برین واشنگ کے ذریعے قومی تعمیر میں اپنا کر دار ادا کریں جبکہ حکومت کو چا ہیے کہ ان کو سکل ڈیو یلپمنٹ ہنر اور روزگار کے مو اقع فر اہم کرے،دین بیر نہیں سکھا تا پا کستا ن میں ہونے والی دہشت گردی کے پیچھے غیر ملکی سا زشیں کا ر فرماں ہیں۔عوامی حلقے
تفصیلات کے مطا بق میڈیا کے ایک سر وے میں عوامی حلقوں سے تعلق رکھنے والی سیا سی وسما جی شخصیات نے کہا کہ تما م سیاسی جما عتوں کو اکٹھا ہونا ہوگا عدم استحکام چا ہنے والی قوتوں کو رو کنا ہو گا مدارس کو ما ڈ ریٹ کرنے کی ضرورت ہے ملک میں سیاسی استحکام نا گزیر ہے مو جو دہ نظام بد لنا ہو گادہشت گردی صرف پا کستان کا مسلہ نہیں بلکہ یہ ایک عا لمی مسلہ ہے تا ہم اب یہ ہماری جنگ بن چکی ہے اور ہمیں ہر حال میں اس کا خاتمہ کرنا ہے دین بیر نہیں سکھا تا بلکہ امن کی بات کرتا ہے لہذا دہشت گردی کے کیخلا ف جنگ میں ہمیں ایک پیج پر آنا ہو گااور دشمن کی سا زشوں کو نا کام بنا نا ہو گااس وقت ہما رے اپنے لو گ شہید ہو رہے ہیں تما م جما عتوں کو امن کے مسلے پر اکٹھا ہونا ہو گا اور بر داشت کا رویہ اپنا کر فو ج کے ساتھ کندھے سے کندھا ملا کر چلنا ہوگاپا کستان میں دہشت گردی کے اسباب دینی یا مذہبی نہیں بلکہ دین کا نام استعما ل کیا گیا ہے انتہا پسندی کا خاتمہ کر کے عدم استحکام چا ہنے والی قوتوں کو روکنا ہو گا علماء اور دانشوروں کو چا ہیے کہ نو جوانوں کی برین واشنگ کے ذریعے قومی تعمیر میں اپنا کردار ادا کریں جبکہ حکومت کو ان کوسکل ڈیو یلپمنٹ ہنر اور روزگار کے موا قع فراہم کرے دہشت گردی کا خاتمہ تعلیم سے ممکن ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں