حکومت کی تعلیم دشمن پالیسیوں کے خلاف کل ضلع بھر کے سکولوں کی تالہ بندی کی جارہی ہے

Punjab Teacher Union Mandi Bahauddin news
ملک وال(نامہ نگار) ان خیالات کا اظہار پنجاب ٹیچرز یونین کے ضلعی صدر بشیر وڑائچ نے پریس کلب ملکوال میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ حکومت آئی ایم ایف کے حکم پر تعلیمی اداروں کی نجکاری کر رہی ہے ، کل ڈی ای او آفس کے سامنے احتجاجی جلسہ ہو گا،ضلعی صدر محمد بشیر وڑائچ نے کہا کہ سرکاری سکولوں کو پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے حوالے کرنے ، اساتذہ کو پیک امتحانات کے نتائج پر سزائیں دینے سے تعلیمی نظام انحطاط کا شکار ہو چکا ہے اساتذہ حکومت کی ظالمانہ پالیسیوں کی بدولت شدید ذہنی کوفت اور دباؤ کا شکار ہیں وزیر اعلیٰ پنجاب محکمہ تعلیم کو ایک مل کی طرز پر چلانے کی کوشش کر رہے ہیں آئے روز کی بدلتی پالیسیوں نے صوبہ میں تعلیمی نظام کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سرکاری سکولوں کے بچوں سے پیک کا امتحان جبکہ پرائیویٹ سکولوں کو چھوٹ دینے کی پالیسی سے ظاہر ہو گیا ہے کہ حکومت سرکاری سیکٹر کو ختم کر کے پرائیویٹ سیکٹر کو آگے لانا چاہتی ہے ۔ پنجاب ٹیچرز یونین کے مرکزی نائب صدر ڈاکٹر نواز انجم نے کہا کہ پنجاب حکومت نے لاہور میں ہونے والے ہمارے احتجاجی دھرنا میں جو وعدے کئے تھے ان پر ابھی تک عملدرآمد نہیں کیا گیا جس پیک امتحان کے تحت اساتذہ کی سزاؤں کا خاتمہ، پی ایس ٹی کو گریڈ 14، ای ایس ٹی کو گریڈ 16جبکہ ایس ایس ٹی اساتذہ کو گریڈ 17دینا بھی شامل تھا انہوں نے کہا کہ دیگر صوبوں میں اساتذہ کو ٹائم سکیل اور اگلے گریڈ دیے جا چکے ہیں لیکن پنجاب حکومت اس پر عملدرآمد کرنے سے گریز کر رہی ہے ۔اس موقع پرپی ٹی یو کے ضلعی نائب صدر راجہ ذوالفقار علی نے کہا کہ آج ضلع بھر کے تمام بوائز اور گرلز سکول مکمل بند رہیں گے جبکہ ڈی ای او آفس کے سامنے ہونے والے جلسہ میں پنجاب ٹیچرز یونین کے مرکزی صدر حافظ غلام محی الدین ،چیئرمین امتیاز احمد عباسی،مرکزی سینئر نائب صدر ملک سجاد اختر اعوان سمیت ضلع بھر سے ہزاروں اساتذہ شرکت کریں گے۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں