جلسہ میں جانے والے قافلہ پر ڈاکوؤں کی فائرنگ ، اندھیرے کے باعث تمام افراد محفوظ رہے

firing pistal

ملک وال(نامہ نگار) جلسہ میں جانے والے قافلہ پر ڈاکوؤں کی فائرنگ ، اندھیرے کے باعث تمام افراد محفوظ رہے ، 15پر اطلاع کے باوجود پولیس نہ پہنچی، متاثرہ افراد کا پولیس کیخلاف شدید احتجاج ، ڈی پی او سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔ تفصیلات کیمطابق نواحی ساہنا کی مسجد کے امام قاری نصیر احمد رضا نے بتایا کہ بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب وہ اپنے دیگر ساتھیوں کے ہمراہ ویگن اور چار موٹر سائیکلوں پرساہنا سے آہلہ اسٹیشن جلسہ میں جا رہے تھے جب کھنانہ کے قریب پہنچے تو تین مسلح ڈاکوؤں نے انہیں رکنے کا اشارہ کیا ۔ لیکن خطرہ بھانپ کرہم نے گاڑیاں بھگا دیں جس پر ڈاکوؤں نے ہم پر فائرنگ کر دی تاہم اندھیرے کی وجہ سے ہم سب محفوظ رہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے پولیس ہیلپ لائن 15پر کال کی لیکن انہوں نے کوئی رسپانس نہیں دیا اور کہا کہ وقوعہ کے متعلقہ تھانہ میں رابطہ کریں انہوں نے کہا کہ ہم نے متعلقہ تھانہ میں بھی فون کیا لیکن کوئی پولیس موبائل جائے وقوعہ پر نہ پہنچی۔
قاری نصیر رضا اور قافلہ میں موجود دیگر افراد نے بتایا کہ ساہنا، کھنانہ، آہلہ روڈ پر ڈکیتی کی وارادتوں آئے روز کا معمول بن چکی ہیں لیکن پولیس کاروائی نہیں کرتی ۔ واقعہ پر پولیس کے عدم تعاون اور غفلت کیخلاف متاثرہ افراد نے شدید احتجاج کرتے ہوئے ڈی پی او منڈی بہاؤالدین راجہ بشارت حسین سے مطالبہ کیا کہ ڈکیتی کی بڑھتی وارداتوں کو روکنے کیلئے فوری پر موثر کاروائی کی جائے اور غفلت کے مرتکب افسران کیخلاف بھی ایکشن لیا جائے اطلاع کے باوجود پولیس کا حرکت میں نہ آنا کسئی سوالات کو جنم دیتا ہے۔۔۔۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں