پنجاب حکومت کی تعلیم و ٹیچر دشمن پالیسیوں کیخلاف بطور احتجاج ضلع بھر کے سکولوں کی تالہ بندی کر کے احتجاجی مظاہرہ کریں گے

Bashir Warraich president teacher unior mandi bahauddin news

ملک وال(نامہ نگار)پنجاب حکومت کی تعلیم و ٹیچر دشمن پالیسیوں کیخلاف 23جنوری کو بطور احتجاج ضلع بھر کے سکولوں کی تالہ بندی کر کے احتجاجی مظاہرہ کریں گے، ان خیالات کا اظہار پنجاب ٹیچرز یونین ضلع منڈی بہاؤالدین کے صدر محمد بشیر وڑائچ، نائب صدر راجہ ذوالفقار علی، متحدہ محاذ اساتذہ کے چیئرمین ڈاکٹر نواز انجم اور محمد ارشد ڈڈ نے گزشتہ روز یہاں رابطہ مہم کے بعد مقامی صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت کی پالیسیوں سے تعلیمی نظام تباہی کے دہانے پر پہنچ چکا ہے انہوں نے کہا کہ پیک امتحان ایک فراڈ اور سرکاری اداروں کو بدنام کر کے پیف کے حوالے کرنے کا ایک مذموم منصوبہ ہے جسے ہر گز کامیاب نہیں ہونے دیں گے پرائیویٹ سکولوں کیلئے کوئی پیک امتحان نہیں جبکہ سرکاری سکول کے بچوں سے چھ ورژن کے پیپر محکمہ تعلیم کو پرائیویٹ کرنے کی سازش ہے ۔ ٹیچرز یونین کے رہنماؤں بشیر وڑائچ، راجہ ذوالفقار ، ڈاکٹر نواز انجم اور ارشد ڈڈ نے کہا کہ 2015میں پیک کے تحت ہونے والے پنجم اور ہشتم کے امتحانات کو پورے پنجاب میں میڈیا نے کور کیا اور اس کی خامیوں کو سب نے دیکھا اور ان خامیوں کے پیش نظر سیکرٹری ایجوکیشن پنجاب نے آرڈر نمبر SO(SE-III)5-6/2015جاری کیا جس میں کہا گیا کہ پیک 2015کے امتحانات کے نتائج پر ہیڈ ماسٹرز اور اساتذہ کو سزائیں نہیں دیں گے لیکن حکومت نے پنجاب بھر میں ہزاروں اساتذہ کو شوکاز نوٹس جاری کر کے سزائیں دیدیں ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر تعلیم نے پی ایس ٹی اساتذہ کو گریڈ 14، ای ایس ٹی کو گریڈ 16اور ایس ایس ٹی کو گریڈ 17 اور ٹائم سکیل دینے کا تحریری وعدہ کیا لیکن اس پر آج تک عمل نہیں کیا گیا جبکہ دیگر صوبوں میں گریڈ اور ٹائم سکیل دیدیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب بھر کے اساتذہ حکومت کی ناقص پالیسیوں کی وجہ سے شدید ذہنی اضطراب کا شکار ہیں جس کیخلاف پنجاب بھر احتجاجی تحریک کا اآغاز 11جنوری سے شروع کر دیا ہے انہوں نے کہا کہ 23جنوری کو ضلع منڈی بہاؤالدین میں ہڑتال کی جائے گی اور سکولوں کی تالہ بندی کر کے منڈی بہاؤالدین میں احتجاجی جلسہ کیا جائے گا جس میں پی ٹی یو کی مرکزی قائدین بھی شریک ہو ں گے۔۔۔۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں