کمپیوٹرائزڈاسلحہ لائسنس کیلئے آنے والے سائل پرنادرااہلکاروں کا تشدد،پرلٹاکرٹھڈوں اورلاتوں سے ٹھکائی کر ڈالی

Nadra office CNIC

کمپیوٹرائزڈاسلحہ لائسنس کیلئے آنے والے سائل پرنادرااہلکاروں کا تشدد،زمین پرلٹاکرٹھڈوں اورلاتوں سے ٹھکائی کردی،کمرے میں بندکردیا۔پولیس نے رہائی دلائی۔نادرا عملہ پیکج لگاکرخوش گپیوں میں مصروف رہتاہے جس سے دفترکے باہرلمبی قطاریں لگ جاتی ہیں،احتجاج کرنے والے سائلین سے بدکلامی اوربدتمیزی معمول بن چکاہے ،وفاقی وزیرداخلہ اوروزیراعظم نوٹس لیں۔
منڈی بہاؤالدین(بیورورپورٹ) تفصیلات کے مطابق نادرادفترمنڈی بہاؤالدین میں کمپیوٹرائزڈاسلحہ لائسنس کیلئے آنے والے سائل کونادرادفترکے اہلکاروں نے بدترین تشددکا نشانہ بناڈالا،اسے ٹھڈوں ،مکوں اورلاتوں سے مارمارادھ مواکردیااوراسے کمرے میں بندکردیا،پولیس نے موقع پرپہنچ کر رہائی دلائی۔نواحی گاؤں چک جانوکارہائشی شاہدنامی سائل رہائشی کمپیوٹرائزڈ اسلحہ لائسنس کے حصول کیلئے نادرادفترآیا،گھنٹوں انتظارکے بعدملازمین کی جانب سے فون پر خوش گپیوں کی وجہ سے اپناکام جلدی کرنے کی درخواست کی تو عملہ نے اسے پکڑکرتشددکا نشانہ بناناشروع کردیا۔ڈھڈوں ،لاتوں اورمکوں سے اس پر بدترین تشدیدکیااوراسے کمرے میں قیدکرلیا۔بعدازاں پولیس نے موقع پرپہنچ کراسے رہائی دلائی۔نادراملازمین نے مضروف کے خلاف مقدمہ درج کرانے کی بھی کوشش کی۔لیکن پولیس نے انکاموقف غلط قراردیا۔ذرائع کے مطابق نادرادفترمیں سائلین کو ذلیل وخوارکرنا،انہیں ہتک آمیزی کا نشانہ بنانااورگالی گلوچ ایک معمول بن چکاہے ،ملازمین کی سست روی کی وجہ سے دوردرازسے آئے ہوئے سائلین کی لمبی قطاریں لگ جاتی ہیں۔شکایت کرنے والے سائل کو دھکے دیکردفترسے نکال دیاجاتاہے،نادراملازمین کی جانب سے سائلین پر تشددکے واقعات میں بھی اضافہ ہوتاجارہاہے۔متاثرہ نوجوان نے اس حوالے سے میڈیاکوبتایاکہ نادراملازمین نے اسے ناحق تشددکا نشانہ بنایاہے اوراسے حبس بیجامیں رکھاہے،انہوں نے وفاقی وزیرداخلہ اوروزیراعظم پاکستان سے مطالبہ کیاہے کہ اس واقعہ کی اعلیٰ سطحی انکوائری کروائی جائے اورذمہ داران کیخلاف مقدمہ درج کرکے سخت کارروائی عمل میں لائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں