42 days of ramadan

وہ کون سا سال تھا جب مسلمانوں نے 42 روزے رکھے تھے اور کیوں؟

رمضان کا بابرکت مہینہ اپنے ساتھ بےشمار نعمتیں اور رحمتیں لے کر آتا ہے،ایک نیکی کا ثواب دگنا ملتا ہے، یہی وجہ ہے کہ رمضان کا انتظار مسلمان پورے سال کرتے ہیں، کہ کب رمضان آئے گا کب روزے رکھیں گے۔

ایک ماہ میں 30 دن ہوتے ہیں اور رمضان میں بھی 30 روزے ہوتے ہیں۔ اس طرح مسلمان ایک سال میں 30 فرضی روزے رکھتے ہیں۔ لیکن ایک سال ایسا بھی گزرا ہے جب مسلمانوں نے ایک سال میں 42 روزے رکھے تھے۔ کیا آپ جانتے ہیں وہ کونسا سال تھا؟

42 روزے ایک سال میں؟

یہ سال ہے 1935 اس سال یکم جنوری کو یکم رمضان تھا اور قمری سال چھوٹا ہونے کی وجہ سے بیس دسمبر میں پھر رمضان آگیا اس طرح 42 روزے رکھے گئے تھے۔ اسی طرح ماہرینِ فلکیات کی جانب سے یہ بھی بتایا جا رہا ہے کہ سال 2030 میں بھی دو مرتبہ رمضان آئے گا اور کم و بیش اس سال بھی 40 سے 42 روزے متوقع ہیں۔

دبئی فلکیات گروپ کے چیف ایگزیکٹو حسن احمد الہریری کا کہنا ہے کہ قمری کیلنڈر میں ایک سال میں 2 مرتبہ رمضان کا آنا کوئی عجوبے کی بات نہیں کیوںکہ قمری مہینہ ہر سال 10 سے 11 دن آگے بڑھتا ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں