51

ایم۔این۔اے حاجی امتیاز احمد چوہدری اور ڈپٹی کمشنر منڈی بہاوالدین نے میونسپل کمیٹی ہال میں مستحق افراد میں صحت انصاف کارڈ تقسیم کئے

منڈی بہاوالدین ( ایم۔بی۔ڈین نیوز 11 اکتوبر2019 ) چیئرمین اسٹینڈنگ کمیٹی برائے پوسٹل سروسزو ایم این اے حاجی امتیاز احمد چوہدری نے کہا ہے کہ صحت انصاف کارڈ کا اجراءحکومت کا انقلابی اقدام ہے۔ وزیراعظم عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کرنے کیلئے دن رات کوشاں ہیں۔ حکومت نے صحت انصاف کارڈ کے ذریعے علاج معالجہ کی سہولتیں فراہم کرکے عام آدمی اور اس کی فیملی کو آسان بنا دیا ہے جس سے پنجاب میں صحت کے شعبہ میں انقلابی تبدیلیاں آئیں گی۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے آج یہاں میونسپل کمیٹی ہال میں مستحق افراد میں صحت انصاف کارڈ تقسیم کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پرڈپٹی کمشنر مہتاب وسیم اظہر، اسسٹنٹ کمشنر کاشف جلیل سمیت دیگر متعلقہ محکموں کے افسران بھی موجود تھے۔

یہ بھی پڑھیں: ایم۔پی۔اے ساجد احمد خان بھٹی اور ڈپٹی کمشنر منڈی بہاوالدین نے قادرآباد میں انصاف صحت کارڈ تقسیم کئے

حاجی امتیاز احمد چوہدری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عوامی فلاح و بہبود کیلئے تمام ممکنہ وسائل بروئے کار لائے جائینگے۔ صحت انصاف کارڈ کی بدولت غریب مستحق افراد عزت و احترام سے سرکاری و نجی ہسپتالوں سے علاج معالجہ کی جدید سہولیات حاصل کر سکیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ صحت انصاف کارڈ سے مستحق افراد 7لاکھ 20ہزار روپے تک کا مفت علاج کروا سکیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ صحت انصاف کارڈ ایک سال کیلئے ہوگا۔ جس کی خود کار سسٹم کے تحت ہر سال تجدید ہوا کریگی۔ جس سے وہ اپنا اور اہل خانہ کا سرکاری و پرائیوٹ ہسپتالوںمیں تمام بڑی بیماریوں سمیت مختلف امراض کا علاج معالجہ کروا سکے گا اور مریض کو سفری اخراجات بھی دئےے جائینگے۔

حاجی امتیاز احمد چوہدری نے کہا کہ حکومت نے صحت کارڈ مہیا کرنے میں شہری اور دیہاتی علاقوں کا فرق ختم کر دیا ہے۔ جس کی بدولت اب شہر اور دیہات کے لوگوں کو برابر سہولیات حاصل ہونگی۔ ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ صحت انصاف کارڈ تقسیم کرنے کا بنیادی مقصد غربت سے نیچے زندگی گزارنے والے افراد کو اعلیٰ اور بہترین علاج فراہم کرنا ہے،عوام کو ریلیف فراہم کرنے کیلئے دن رات کوشاں ہیں ہمارا مقصد عوام کوزیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کرنا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: انصاف صحت کارڈ کیلئے کون مستحق ہے؟ منڈی بہاوالدین میں یہ کارڈ کہاں سے ملے گا؟ اور اس کارڈ سے منڈی بہاوالدین کے کون کون سے ہسپتالوں سے علاج ہو سکے گا؟ تفصیلات پڑھیں

مہتاب وسیم اظہر نے کہا کہ شعبہ صحت کی ترقی موجودہ حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے اور جدید علاج معالجہ کی سہولیات کے ثمرات غریب و نادار مریضوں تک پہنچائے جارہے ہیں۔ حکومت 38فیصد غربت کی لکیر کے نیچے 72لاکھ خاندانوں کے تقریباََ چار کروڑ افراد کو صحت انصاف کارڈ فراہم کررہی ہے۔ اب دیہی علاقوں میں لوگ صحت انصاف کارڈ کے ذریعے باعزت طریقے سے اپنا مفت علاج کروا سکتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں