121

مہنگے پٹرول سے نجات، پاکستانی ساختہ سستی الیکٹرک موٹرسائیکل استعمال کریں

اسلام آباد: پیٹرول کی آسمان کو چھوتی قیمتوں سے پریشان موٹر سائیکل سواروں کے لیے خوشخبری ہے کہ اب پاکستان میں الیکٹرک انجن سے چلنے والی موٹرسائیکلیں تیار کی جارہی ہیں جسے 50 کلومیٹر کی ایوریج پر ماہانہ صرف 500 روپے میں چلایا جاسکتا ہے۔

برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کے مطابق پاکستان کے صوبے پنجاب کے شہر ساہیوال میں 2 اداروں نے باہمی اشتراک سے پٹرول کے بجائے برقی توانائی سے چلنے والی موٹرسائیکل کو مقامی سطح پر تیار کرنے کا دعویٰ کیا ہے جس کی ہیئت تو روایتی موٹرسائیکل کی طرح ہی ہے لیکن اس میں پٹرول سے چلنے والے انجن کے بجائے برقی توانائی سے کام کرنے والے انجن کو نصب کیا گیا ہے۔

یوں تو بجلی سے چلنے والی موٹر سائیکلیں پاکستان میں ایک دہائی سے موجود ہیں لیکن یہ سب درآمد شدہ ہیں جن کی قیمت لاکھوں میں ہیں لیکن کافی مہنگی ہونے کے باعث یہ موٹر سائیکلیں متوسط طبقے کی دسترس سے باہر ہیں تاہم ساہیوال کے عثمان شیخ نے اس موٹر سائیکل کو مقامی سطح پر تیار کرلیا ہے۔

ساہیوال سے تعلق رکھنے والے اوج ٹیکنالوجیز کے عثمان شیخ نے الیکٹرک بائیک کی تیاری میں استعمال ہونے والے پرزہ جات کو پاکستان میں ہی اسمبل کرکے موٹر سائیکل تجارتی بنیادوں پر تیار کی ہے جس میں روایتی پرزوں جیسے گیئر، کک، گیئر لیور، موبل آئل اور چین گراری سیٹ کی ضرورت نہیں رہتی اور یہ ماحول دوست بھی ہے۔

عثمان شیخ نے بی بی سی کو مزید بتایا کہ ہم نے پٹرول سے چلنے والی روایتی موٹر سائیکل کے پہلے سے موجود ایکو سسٹم سے فائدہ اٹھایا اور مقامی سطح پر الیکٹرک بیٹری سسٹم تیار کیا ہے اور ساتھ ہی کنٹرولر، بیٹری مینجمنٹ سسٹم (بی ایم ایس)، چارجر، موٹر اور بیٹری پیک ڈیزائن کیے ہیں۔

ان الیکٹرک بائیک کی رینج 70 کلومیٹر ہے جس کے بعد انہیں گھر یا دفتر میں 5 گھنٹے میں چارج کیا جا سکتا ہے۔ یہ بائیکس 50 کلومیٹر تک ایوریج دیتی ہے جس کا مطلب ہوا اسی رینج میں عام موٹر سائیکل کا پٹرول خرچہ ماہانہ 4 ہزار ہوگا تو الیکٹرک بائیک میں یہ خرچہ صرف 500 ہوگا۔

آلودگی سے پاک، بغیر شور کیے چلنے والی ماحول دوست اور کم خرچ الیکٹرک موٹرسائیکل کی ابتدائی طور پر قیمت 88 ہزار روپے رکھی گئی ہے جب کہ پٹرول پر چلنے والی موٹرسائیکل کو بھی الیکٹرک موٹرسائیکل میں تبدیل کرایا جا سکتا ہے۔ چین، جاپان اور یورپ کے کئی ممالک میں الیکٹرک گاڑیاں اور موٹر سائیکلوں کا استعمال عام ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں