83

تھانہ ملکوال: اے.ایس.آئی عنصر بٹ نے گزشتہ رات 2 بجے محلہ شیرانوالہ میں ایک غریب کرسچن فیملی کے گھرکی دیواریں پھلانگ کر دو لڑکوں کو پکڑا اور سارا دن حبس بےجا ناجائز طریقے سے حوالات میں بند رکھا

ملکوال ( شہزاد چوہدری سے ) تھانہ ملکوال بدنام زمانہ کرپٹ اےایس آئی عنصر بٹ نے گزشتہ رات 2 بجے محلہ شیرانوالہ میں ایک غریب کرسچن فیملی کے گھر چادر چاردیواری کا تقدس پامال کرکے دیواریں پھلانگ کر دو لڑکوں کو پکڑا اور سارا دن حبس بےجا ناجائز طریقے سے حوالات میں بند رکھا اور آج دن 2 بجے رستم نامی ایک لڑکے کو چھوڑ دیا.

جب انہوں نے رات جیب سے نکالی گئی رقم کی واپسی کا تقاضہ کیا تو عنصر بٹ نے اسکا بٹوا واپس کرکے دوسرے لڑکے شارون مسیح پر آج دن بوقت 3:30 کا وقوعہ بنا کر 1750 گرام چرس برآمدگی کا جھوٹا بےبنیاد مقدمہ زیر دفعہ (9 سی) CNSA کے درج کردیا جبکہ متاثرہ فیملی کے گھر گزشتہ رات 2 بجے کے قریب دھاوا بولا گیا،

عورتوں کو گالیاں دی گئی بدتمیزی کی گئی جس کی بدتمیزی کرتے وقت کی ویڈیو بھی متاثرہ فیملی کے پاس موجود ہے اور دوران ریڈ پولیس اہلکار اپنی سرکاری کیپ بھی وہاں بھول گیا، متاثرہ فیملی انتہائی غریب ہے محنت مزدوری کرکے گزارا کرتے ہیں متاثرہ فیملی کے فرد بلدیہ میں سینٹری ورکرز ہیں،

اطلاعات کے مطابق گزشتہ دنوں (CTI) اور سپیشل برانچ نے ملکر منشیات فروش تھانہ ملکوال میں پکڑوائے تھے جس کو عنصر بٹ نے ایک ٹاوٹ کے ذریعے پیسے لےکر چھوڑ دیا تھا جس پر متعلقہ برانچز نے عنصر بٹ کے خلاف ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کو کمپلینٹ کی جس پر ڈی پی او صاحب نے عنصر بٹ اے ایس آئی کی انکوائری لگا رکھی ہے اس پر پردہ ڈالنے کےلیے عنصر بٹ بےگناہ لوگوں پر جھوٹے نے بنیاد مقدمات درج کر رہا ہے ایسے کرپٹ ملازمین کی وجہ سے پولیس کا ادارہ بدنام ہے اور ایسے اہلکار ہی غریب اور بےگناہ لوگوں کو مقدمات میں۔پھنسا کر ایک مجرم بنا دیتے ہیں،

ایسے داغ دار اہلکاروں کیوجہ سے پولیس کے نوجوانوں کی قربانیوں کو رائیگاں کیا جاتا ہے اور ایسے لوگوں کی وجہ سے دیگر قابل افسران کو بھی پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے ایسے ملازمین کے خلاف شفاف انکوائری کرکے انکے خلاف کاروائی کی جانی چاہیے اس سے قبل بھی عنصر بٹ ملکوال تھانہ تعنیاتی کے دوران جھوٹے مقدمات درج کرچکا ہےاور جس پر اسکو معطل بھی کیا جاچکا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں