280

منڈی بہاوالدین کے 2 جوان بھائی اٹلی کی جھیل میں ڈوب کر جانبحق۔

منڈی بہاوالدین کے 2 جوان بھائی اٹلی جھیل میں ڈوب کر جانبحق۔ محمد وقاص اور محمد حسن کو کیا پتہ تھا؟ کہ یہ سیلفی ان کی زندگی کی آ خری سیلفی ثابت ہو سکتی ہے۔

عبدالحفیظ صاحب آف منڈی بہاولدین جو اٹلی کے شہر بیر گامو کے قصبہ Azzano San Paolo میں رہتے ہیں۔یہ اپنے بچوں کے بہتر مستقبل کیلئے پاکستان سے سال 2009 میں ان کی امیگریشن کراکے پاکستان سے اٹلی لے آئے۔ان کے بڑے بیٹے محمد اویس کی سال 2009 میں عمر 9سال تھی۔اور محمد وقاص کی عمر 6سال تھی۔اور محمد حسن کی عمر سات سال تھی۔محمد حسن سال 2009میں اٹلی نہیں آئے تھے۔وہ صرف اکیلے پاکستان میں اپنے چاچا کے ساتھ رہے تھے۔محمد حسن 13اگست سال 2019گزشتہ ویک سوموار والے دن پاکستان سے اٹلی آئے تھے۔

ان بھائیوں نے 16اگست بروز جمعہ سال 2019کو جھیل لاگو دی ایز یو (Lago d’iseo)پر نہانے اور پکنک منانے کا پروگرام بنایا اور گھر سے نکل پڑے۔اور لاگو دی ایز یو کے Tavernolaکے مقام کے قریب جھیل پر تینوں بھائی نہانے لگے۔ یہ پانی میں نہاتے نہاتے جھیل میں گہرے پانی کی طرف چلے گئے۔ ان میں سے کسی ایک کو بھی تیراکی نہیں آ تی تھی ۔محمد حسن جس کی عمر سترہ سال تھی پانی میں ڈوبنے لگا تو اس کو بچانے کے لیے 16سالہ اس کا بھائی محمد وقاص اس کے پیچھے چلا گیا اور وہ بھی اس کے ساتھ ڈوبنے لگا۔

ان دونوں بھائیوں کو ڈوبتے دیکھ کر تیسرا بھائی محمد اویس جس کی عمر اگلے ماہ 19 سال ہو جانی ہے وہ بھی ان دونوں بھائیوں کو بچانے کے لیئے ان کے پیچھے گود پڑا۔تیسرا بھائی محمد اویس بھی ڈوبنے لگا۔اور مدد کے لیے لوگوں کو پکارنے لگا۔تو جھیل میں نہانے والے لوگ سمجھ رہے تھے کہ یہ آپس میں مذاق کر رہے ہیں۔ایک اٹالین وکیل جس کا تعلق بھی بیر گامو سے تھا جو پانی میں نہا رہا تھا اس نے بڑی مشکل سےمحمد اویس کو باہر نکال کر ڈوبنے سے بچایا۔انہوں نے ریسکیوکے عملےکو فون کیا۔ لیکن ریسکیو کا عملہ آنے میں تقریبا آدھا گھنٹہ گزر گیا۔ریسکیو کے عملے نے پانی میں جاکر ان دونوں محمد حسن اور محمد وقاص کو پانی سے باہر نکالا جہاں پانی کی گہرائی تین چار میٹر کی تھی۔اور یہ تقریباً پانی کے گہرائی میں 40 منٹ تک ڈوب رہے۔ان کی حالت بہت تشویش ناک تھی۔

محمد وقاص کو جس کی عمر 16 سال تھی جو سب سے چھوٹا تھا اس کو ایک ہیلی کاپٹر کے ذریعے بریشیا سول ہسپتال میں لایا گیا۔اور دوسرا اس کا بھائی محمد حسن جس کی عمر سترہ سال تھی اس کو دوسرے ہیلی کاپٹر کے ذریعے بیرگامو کے ہسپتال میں لایا گیا۔رات گیارہ بجے کے قریب محمد وقاص بریشیا ہسپتال میں وفات پا گیا اور ٹھیک ایک گھنٹے بعد اس کا دوسرا بھائی محمد حسن جو 13اگست کو پاکستان سے آ یا تھا وہ بھی بیر گامو اسپتال میں وفات پا گیا۔

ان کے بڑے بھائی کا کہنا تھا کہ ہم تقریبا 18 دفعہ پہلے بھی اس جھیل میں نہانے کے لیے جا چکے ہیں۔لیکن اس بار ہمارے ساتھ بہت ہی بڑا حادثہ پیش آیا جسے ہم زندگی میں کبھی نہیں بھول سکتے۔اس حادثے سے میں میرے 2 جوان بھائیوں کی موت واقع ہوگئی۔اللہ تعالی کسی دشمن کو بھی ایسا دن دیکھنا نصیب نہ کرے جس میں کسی ایک باپ کے دو نوجوان بیٹے سولہ اور سترہ سال کی عمروں کے ان سے جدا ہو جائیں۔اٹلی کی تمام پاکستانی کمیونٹی عبدالحفیظ صاحب کے دکھ درد اور غم کی اس گھڑی میں ان کے برابر کی شریک ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں