24

پولیس اہلکاروں کو دیکھ کر ٹریکٹر نہ روکنے کی پاداش میں اہلکاروں کا کسان پر بہیمانہ تشدد اور غیر قانونی حراست میں لے کر چوکی میں بند رکھنے پرکسانوں کا پریس کلب کے سامنے پولیس اہلکاروں کے خلاف احتجاج

ملک وال (نامہ نگار) پولیس اہلکاروں کو دیکھ کر ٹریکٹر نہ روکنے کی پاداش میں اہلکاروں کا کسان پر بہیمانہ تشدد اور غیر قانونی حراست میں لے کر چوکی میں بند رکھنے پرکسانوں کا پریس کلب کے سامنے پولیس اہلکاروں کے خلاف احتجاج،وزیراعلیٰ پنجاب عثمان احمد بزدار ہمیں انصاف فراہم کریں۔

تفصیلات کے مطابق تھانہ میانہ گوندل کے علاقہ ریڑکا بالا کے رہائشی محمد اشرف ولد محمد حسین نے اپنے دیگر ساتھیوں کے ہمراہ پریس کلب کے سامنے احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ ریڑکا بالا پولیس چوکی میں تعینات اہلکاروں الطاف احمد،شیراز اور خالد محمود نے 11 جون کے روز میرے بیٹے فراست اللہ کو ٹریکٹر کھیتوں میں لے جاتے ہوئے رستے پر پولیس اہلکاروں کو دیکھ کر نہ رکنے کی پاداش میں ٹریکٹر سے اتار کر شدید تشدد کا نشانہ بنا یااور غیر قانونی طور پر حراست میں لے کر چوکی میں بند کر کے پولیس مقابلے میں قتل کر دینے کی دھمکیاں بھی دیں،

اس موقع پرکسانوں نے بتایا کہ واقعہ کے حوالے سے ڈی پی او منڈی بہاوالدین کو درخواست دے رکھی ہے جس پر ڈی ایس پی ملکوال کو انکوائری افسر مقرر کیا گیا ہے مگر انکوائری کرنے کی بجائے ڈی ایس پی دفتر میں ہمیں کئی گھنٹے بٹھا نے کے بعد 18 جون کی تاریخ دے دی گئی ہے جبکہ پولیس اہلکار صلح کے لئے ہم پر دباؤ ڈال رہے ہیں۔

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان احمد بزدار ہمیں انصاف فراہم کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں