74

شیرانوالہ ریولے پھاٹک پر درجنوں افراد کا لٹکتی بجلی کی تاروں کیخلاف ریلوے انتظامیہ کیخلاف احتجاجی مظاہرہ، مظاہرین نے ریلوے ٹریک اور بائی پاس روڈ بلاک کر دی

ملک وال(نامہ نگار)شیرانوالہ ریولے پھاٹک پر درجنوں افراد کا ریلوے انتظامیہ کیخلاف احتجاجی مظاہرہ، مظاہرین نے ریلوے ٹریک اور بائی پاس روڈ بلاک کر دی، ریلوے انتظامیہ ہمارے گھروں کی چھتوں سے گذرنے والی الیون کے وی بجلی تاروں کو ہٹانے میں رکاوٹ ڈال رہی ہے مظاہرین کا الزام ، تاریں ریلوے حدود سے گذارنے کیلئے گیپکو این او سی کیلئے سات لاکھ روپے ادا کرے ریلوے حکام کا موقف،

تفصیلات کیمطابق محلہ شیرانوالہ میں الیون کے وی بجلی کی تاریں گھروں کی چھتوں سے انتہائی نیچی گذر رہی ہیں جس کی سے کئی حادثات ہو چکے ہیں اور کئی بچے جاں بحق اور زخمی ہو چکے ہیں تاہم گیپکو اور ریلوے انتظامیہ میں باہمی چپقلش کی وجہ سے منصوبہ کھٹائی میں پڑا ہوا ہے تاہم اس میں نقصان متاثرہ علاقہ کے مکینوں کا ہو رہا ہے ، متاثرہ علاقہ کے درجنوں مکینوں نے شیرانوالہ ریلوے پھاٹک پر احتجاجی مظاہرہ کیا مظاہرین نے ریلوے ٹریک اور بائی پاس روڈ کو بلاک کر دیا مظاہرین نے ریلوے حکام کیخلاف شدید نعرہ بازی کی ،
یہ خبر بھی پڑھیں
شیرانوالہ: چھت سے گذرنے والی 11 کے وی کی تاروں سے چھو کر دو بچے جھلس کر شدید زخمی ہو گئے، ورثا اور اہل محلہ کا احتجاجی مظاہرہ

اسسٹنٹ کمشنر ملکوال محمد سلیم راجہ موقع پر پہنچے اور ریلوے حکام کو بھی موقع پر بلوا لیا ریلوے حکام نے نے بتایا کہ گیپکو کو ریلوے حدود سے تاریں گذارنے کیلئے این او سی لینا ہو گا جس کی فیس سات لاکھ روپے جمع کروانی ہو گی جبکہ گیپکو حکام نے کہا کہ وہ اتنی فیس کہاں سے جمع کروائیں انہوں نے کہا کہ وہ تاریں اونچی کرنے کیلئے تیار ہیں لیکن اس میں ریلوے انتظامیہ رکاوٹ ہے ،

اسسٹنٹ کمشنر سلیم راجہ نے ریلوے انتظامیہ سے کہا کہ وہ اس مسلہ کو حل کریں ، اسسٹنٹ کمشنر کی یقین دہانی پر مظاہرین منتشر ہو گئے ۔۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں