67

قتل کے مقدمہ میں میرٹ پر تفتیش نہ کرنے کے الزام پر لواحقین کا ٹائر جلا کر ملکوال گوجرہ روڈ بند کر کے پولیس کے خلاف احتجاجی مظاہرہ

ملک وال(نامہ نگار) قتل کے مقدمہ میں میرٹ پر تفتیش نہ کرنے کے الزام پر لواحقین کا ٹائر جلا کر ملکوال گوجرہ روڈ بند کر کے پولیس کے خلاف احتجاجی مظاہرہ ، احتجاج کرنے پر تفتیشی افسر نے مدعی مقدمہ کو حراست میں لے لیا ۔ایس ایچ او ملکوال صغیر شاہ کی طرف سے لواحقین کو انصاف کی یقین دہانی اور مدعی کی رہائی کے بعد مظاہرین پر امن منتشر ہوگئے ۔

تفصیلات کے مطابق موضع 22چک لوکڑی کے رہائشی محنت کش شفقت محمود نے اہل علاقہ کے ہمراہ پولیس کی جانب سے جانبداری کرنے پر احتجاجی مظاہرہ کیا مظاہرین میں خواتین بھی شامل تھیں مظاہرین نے ملکوال گوجرہ روڈ کو ٹائر جلا کر بلاک کر دیا جس سے سڑک پر دونوں اطراف میں گاڑیوں کی لائنیں لگ گئیں

پولیس تھانہ ملکوال کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے مدعی شفقت محمود نے کہا کہ میری بیوی شمیم بی بی کو ملزم بشارت نے آہنی راڈ مار کر زخمی کر دیا تھا جو بعدازاں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جانبحق ہوگئی تھی جس پر پولیس تھانہ ملک وال نے ملزم کیخلاف قتل کی بجائے زخمی ہونے کا مقدمہ درج کر کے ملزم کو گرفتا رکر لیا ،

متاثرہ شخص نے الزام عائد کیا کہ تفتیشی افسر سب انسپکٹر اظہر روز انہ ہمیں انکوائری کے لئے بلا کر سارا دن بٹھاکر گھر بھیج دیتا ہے مدعی نے کہا کہ ملزم بشارت ہمیں تھانہ میں بھی دھمکیاں دیتا ہے پولیس ہمیں انصاف فراہم نہیں کر رہی، متاثرہ شخص نے چیف جسٹس پاکستان سے مطالبہ کیا کہ ہمیں انصاف دیا جائے ، پولیس موقع پر پہنچی اور مظاہرہ کرنے پر مدعی کو حراست میں لے لیا،

اس حوالے سے تفتیشی افسر اظہر نے بتایا کہ پولیس نے ان کے ملزم بشات کو گرفتار کررکھا ہے اور اسکے خلاف دفعہ 324 کے تحت درج کیا تھا جبکہ خاتون کے جانبحق ہونے پر دفعہ302شامل کر لی گئی ہے بعدازاں ایس ایچ او صغیر شاہ کی طرف سے مدعی مقدمہ کی رہائی اور انصاف کی فراہمی کی یقین دہانی کے بعد مظاہرین پرامن منتشر ہو گئے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں