80

پاہڑیانوالی،مین بازارپاہڑیانوالی سے خواتین سمیت عام آدمی کا گزرنا دوبھر ہوگیامیڈیا کی بارہا نشان دہی کے باوجو انتظامیہ مین بازارسٹرک کے اطراف قبضہ ختم نہ کرا سکی

پاہڑیانوالی(احسان الحق نازش سے)مین بازارپاہڑیانوالی سے خواتین سمیت عام آدمی کا گزرنا دوبھر ہوگیامیڈیا کی بارہا نشان دہی کے باوجو انتظامیہ مین بازارسٹرک کے اطراف قبضہ ختم نہ کرا سکی ،ناجائز تجاوز کی انتہاء دکانداردوکانوں کوبڑھا کر سڑک کے وسط تک لے آئے، عام ٹرانسپوٹ تو درکنار پیدل خواتین اور طالبات کا گزرنا بھی دوبھر ہوگیا ۔ٹھیلہ،چھابڑی فروشوں اور رکشوں کی بٖڑی تعداد بازار بھر میں سڑک پر براجمان ، پیدل خواتین کا بازار سے گزرنا جوئے شیرلانے کے مترادف۔تفصیلات کے مطابق پاہڑیانوالی کے اکلوتے مین بازار میں سڑک کے اطراف دوکاندار مافیانے ایک عرصہ سے قبضہ جما رکھا ہے اور ان کو کوئی پوچھنے والا نہیں ہے انتظامیہ کی روائتی عدم دلچسپی کی وجہ سے لوگوں کی کثیر تعدادکاریںموٹر سائیکل رکشہ اورسامان والی گاڑیاںمین بازار مین کھڑی کردیتے ہیں جبکہ ٹھیلہ فروشوں نے بھی نصف سے زائد سڑک پر قبضہ جما رکھا ہے جس کی وجہ سے ٹریفک تو درکنار، ایک عام آدمی کا گزرنا مشکل ہوگیا ہے۔تجاوزات کی بھر مار نے پاہڑیانوالی کی ٹریفک اورعوام کیلئے مسائل کے ساتھ ساتھ شہر کا حلیہ بگاڑ کے رکھ دیا ہے۔ عوامی حلقوں نے ڈی سی منڈی بہائوالدین سے اصلاح احوال کا مطالبہ کیا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں