28

پھالیہ اسسٹنٹ کمشنر کی عدم دلچسپی اورپرائس کمیٹیاں غیر فعال ہونے سے منافع خوروں کی چاندی

پاہڑیانوالی(احسان الحق نازش سے)اسسٹنٹ کمشنر کی عدم دلچسپی اورپرائس کمیٹیاں غیر فعال ہونے سے منافع خوروں کی چاندی ،قصاب،فروٹ فروش اور دوکاندار شہریوں کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنے لگے ،رمضان کی آمد سے قبل ہی قیمتیں آسمان کو چھونے لگیں ۔تفصیلات کے مطابق پھالیہ میں ٹرانسفر ہو کر آنے والے نئے اسسٹنٹ کمشنر ظہیر احمد جپہ کی عوامی مسائل میں عدم دلچسپی اور پرائس کنٹرول کمیٹیوں کے غیر فعال ہونے کی وجہ سے بازار میں بیٹھے ناجائز منافع خوروں نے اشیاء خوردونوش کی قیمتوں میں من مانا اضافہ کر دیا ہے جس سے اشیاء ضروریہ کی چیزیں غریب آدمی کی پہنچ سے دوور ہو کر رہ گئی ہیں پھل فروشوں نے سرکاری چھوٹ کا فائدہ اٹھاتے ہوئے آم 400،سیب 300،کیلا 200،چیری 300 فی کلو ریٹ لگا رکھا ہے جبکہ قصابوں نے بھی بڑا گوشت 380،چھوٹا گوشت 800اور چکن 300روپے فی کلو فروخت کرنا شروع کیا ہوا ہے سبزی فروش بھی شہریوں سے منہ مانگے دام بٹورنے میں مصروف ہیں آلو نیا 60روپے ،کریلے60،ٹماٹر 60،بھنڈی توری100روپے فی کلو ریٹ لگا رکھا ہے دوکاندار وں نے بھی گھی دالوں چنوں اور مرچ کے مصنوعی نرخ بڑھا لیے ہیں جس سے عام آدمی کی قوت خرید کم ہو کر رہ گئی ہے دودھ دہی مافیا نے بھی من مانے نرخ لگا رکھے ہیں اور ان کو کوئی پوچھنے بلانے والا نہ ہے ،پاہڑیانوالی کے شہریوں نے اعلی حکام سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ رمضان کی آمد سے قبل مصنوعی مہنگاہی کرنے والے عناصر کے خلاف سخت ترین کارروائی عمل میں لائی جائے اور رمضان المبارک کے مقدس ماہ میں ان ناجائز منافع خوروں کے گٹھ جوڑ کو توڑنے کے لئے اسسٹنٹ کمشنر پھالیہ ظہیر احمد جپہ کے ساتھ ساتھ پرائس کنٹرول کمیٹیوں کو بھی فعال کیا جائے تاکہ عام شہری بھی کھانے پینے کی اشیاء سے فائدہ اٹھا سکیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں