115

نارنگ: معمر میاں بیوی اور بیٹی سمیت پانچ افراد کے خلاف مکان پر قبضہ کرنے کی کوشش اور سنگین نتائج کی دھمکیاں دینے کے الزام میں مقدمہ درج کرلیا

نوٹوں کی چمک یا سیاسی پریشر، قانون مذاق بن گیا،پولیس گردی کا انوکھاکارنامہ ،معمر میاں بیوی اور بیٹی سمیت پانچ افراد کے خلاف مکان پر قبضہ کرنے کی کوشش اور سنگین نتائج کی دھمکیاں دینے کے الزام میں مقدمہ درج کرلیا۔
پھالیہ(تحصیل رپورٹر) نارنگ کے رہائشی امتیازاحمد ولد فضل الٰہی نے تھانہ پھالیہ پولیس کو ایک درخواست دی جس میں موقف اختیار کیا کہ 3سال قبل اپنا مکان لال خاں ولد غلام محمد کوکرایہ پر دیا جس کا وہ کرایہ ادا کرتا رہا ہے اب وہ مکان فروخت کرنا چاہتا ہے لال خان نے خالی کرنے سے صاف انکار کردیا ہے۔ پولیس نے لال خاں ،صغراں بی بی زوجہ لال خاں ،طوبیٰ دختر لال خاں اور دو نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کرکے75سالہ لال خاں کو حوالات میں بند کردیا۔ اس سلسلہ میں صغراں بی بی کا کہنا تھا کہ انہوں نے تین سال قبل امتیازاحمد سے مکان کرایہ پر حاصل کیا جو بعدازاں ایک سال قبل 28لاکھ روپے کا خرید کیا ہے اور اس کا بیعانہ دولاکھ ادا کردیا تھا جس کے بعد امتیازاحمد نے مکان کی باقی رقم وصول کرنے کی بجائے بیعہ بذریعہ رجسٹری کروانے سے انکاری ہوگیا جس پر ہم نے امتیاز کے خلاف سول کورٹ بعدالت جناب عدنان یوسف دعویٰ دائرکیاہوا ہے جس پر امتیاز نے دعویٰ کو خاطر میں نہ لاتے ہوئے ایس ایچ او تھانہ پھالیہ ساجد محمود سوہل کی ملی بھگت سے پھالیہ پولیس کے اہلکاروں و افسران نے نہ صرف ہماری خواتین کی تذلیل کی بلکہ ہمیں سنگین نتائج کی دھمکیاں دیتے ہوئے مکان باہر نکال دیا اور ہماری چیخ وپکار کے باوجود امتیاز و دیگر مسلح افراد کو مکان میں داخل کردیاصغراں بی بی نے مزید بتایا کہ ہمارا عدالت میں کیس چل رہا ہے اور سٹے آرڈر بھی ہمارے پاس ہے تو موصوف ایس ایچ او کا کہنا تھا کہ میں کسی عدالت یا سٹے آرڈر کو نہیں مانتا جس پرایس ایچ او تھانہ پھالیہ نے میرے خاوند لال خاں کو مورخہ 28دسمبر2017کو حوالات میں بندکرکے مقدمہ درج کرلیا حیرت کی بات یہ ہے کہ ہم اس مکان پر عرصہ تین سال سے قابض ہیں اور ہمارے خلاف قبضہ کرنے اور سنگین نتائج کی دھمکیاں دینے کے الزام پر مقدمہ درج کرلیا گیاہے جبکہ اس مکان ہمیں فروخت کرکے بیعانہ دولاکھ روپے بذریعہ اعجازاحمد ملہی ایڈووکیٹ وصول کیا ہوا ہے۔ اب موصوف مکان کی زیادہ قیمت ملنے پر پہلے سے طے شدہ معاہدہ سے منحرف ہوگیا ہے۔ صغراں بی بی نے وزیر اعلیٰ پنجاب سے قانون سے مذاق کرنے والے ایس ایچ اواور تھانہ کے اہلکاروں کے خلاف کارروائی اور دادرسی کا مطالبہ کیا ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں