33

ملک بھر کی طرح منڈی بہائوالدین میں بھی 8 اکتوبر کو قدرتی آفات سے آگاہی کا دن منایا گیا، دعائیہ تقریبات اور واک کا اہتمام بھی کیا گیا

منڈی بہاؤالدین ( ایم بی ڈین نیوز )ڈپٹی کمشنر منڈی بہاؤالدین حافظ شوکت علی نے قومی دن برائے قدرتی آفات پر آگاہی کے حوالہ سے کہا ہے کہ 8اکتوبر 2005کے دن پاکستان کے مختلف علاقوں میں آنے والے تباہ کن زلزلہ میں 73ہزار سے زائد افراد لقمہ اجل بن گئے۔ اس سانحہ میں بے پناہ مالی نقصان بھی ہوا ۔جس کا پاکستان متحمل نہیں تھا۔ اس ہولناک زلزلہ کو قوم کبھی فراموش نہیں کر سکتی۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے ڈسٹرکٹ کمپلیکس میں شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ محفوظ معاشرہ کے قیام کے لئے انفرادی اور اجتماعی تربیت کی حیثیت مسلمہ ہے۔زلزلہ، سیلاب جیسی آفات قدرت کی طرف سے آتی ہیں۔ ان کو روکنا انسان کے بس کی بات نہیں لیکن قدرتی آفات اور حادثات میں انسانی جانوں اور وسائل کو بچانے کے لئے افراد کا تربیت یافتہ ہونا ضروری ہے۔ کسی بھی حادثہ کی صورت میں تربیت یافتہ اور ماہر افرادی قوت ان حادثات میں نقصان کی شرح کو کم سے کم سطح پر رکھنے میں کلیدی کردار ادا کرتی ہے۔ ابتدائی طبی امداد سمیت آگ پر قابو پانے کی تربیت ، زلزلہ اور سیلاب کی تباہ کاریوں میں دوسروں کی مدد کے لئے تربیت حاصل کرنا تا کہ بنی نوع انسان کی خدمت کی جا سکے۔ ڈسٹرکٹ ایمرجنسی آفیسرعمران خان نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ ریسکیو 1122ایک ایسا قومی ادارہ ہے جس سے منسلک افراد ہمہ وقت کسی بھی ہنگامی صورتحال میں انسانیت کی خدمت کے لئے تیار رہتے ہیں۔ یہ فورس نہ صرف بروقت ریسپانس کرتی ہے بلکہ انسانیت کی خدمت کے جذبہ سے سرشار ہو کر اپنی جانوں کی پرواہ کئے بغیر قدرتی آفات، حادثات اور کسی بھی ہنگامی صورتحال میں بر وقت امداد و معاونت کے لئے پیش پیش رہتی ہے۔قبل ازیں اس سانحہ میں جاں بحق ہونے والے افراد کے لئے ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی اور مرحومین کے درجات کی بلندی اور ملک و قوم کی سلامتی اور استحکام کے لئے دعا کی گئی۔اختتام پر عقیدت و احترام سے آگاہی واک بھی کی گئی جس کی قیادت ڈپٹی کمشنر حافظ شوکت علی نے کی۔
٭٭٭٭٭٭

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں