62

میونسپل کمیٹی ملک وال کے بجٹ کی منظوری کے بعد ساڑھے چار کروڑ روپے کی مختلف ترقیاتی سکیموں کی منظوری بھی دیدی گئی

ملک وال(نامہ نگار) میونسپل کمیٹی ملک وال کے بجٹ کی منظوری کے بعد ساڑھے چار کروڑ روپے کی مختلف ترقیاتی سکیموں کی منظوری بھی دیدی گئی ، سکیموں میں شہر کے قبرستانوں کیلئے مزید زمین کی خریداری، جنازہ گاہ کی تعمیر، چاردیواری، ڈاکخانہ روڈ پر ٹف ٹائل روڈ کی تعمیر سمیت دیگر منصوبے شامل ہیں، اپوزیشن کی مخالفت پر سیکرٹری لوکل گورنمنٹ نے میونسپل کمیٹی ملک وال کے بجٹ کی منظوری دی ہے۔ تفصیلات کیمطابق میونسپل کمیٹی ملک وال کے چیئرمین حافظ قدیرالحسن شاہ اور وائس چیئرمین حبیب الرحمن بھٹی نے صحافیوں کو بتایا شہر کی مختلف سکیموں کیلئے ساڑھے چار کروڑ روپے کے فنڈز مختص کر دیے گئے ۔ انہوں نے بتایا کہ رانا چوک سے شیرانوالہ ریلوے پھاٹک تک ٹف ٹائل سڑک بچھانے کیلئے ایک کروڑ روپے،پرانا ٹبہ والا قبرستان کیلئے مزید زمین کی خریداری کیلئے ایک کروڑ ،محلہ صابری قبرستان کے جنازہ گاہ اور چاردیواری کیلئے 20لاکھ ، محلہ رضا آباد پیر لہوڑا قبرستان کی چاردیواری کیلئے 10لاکھ ،چونگی بائی پاس سے محلہ راجگان، عبداﷲ مسجد روڈ اور محلہ قصاباں میں سٹریٹ لائٹس کیلئے 40لاکھ، محلہ شیرانوالہ پھاٹک سے بھٹی چوک محلہ صابری تک سٹریٹ لائٹس کیلئے 40لاکھ جبکہ شہر میں گلیاں ، نالیاں، سولنگ، پلیاں، جنگلہ جات ، پی پی سی کیلئے 10لاکھ روپے کے فنڈز منظور کر لئے گئے ہیں ۔ انہوں نے مزید بتایا کہ سیکیورٹی کیمرے بمعہ یو پی ایس بیٹری، فوٹو سٹیٹ مشین، جنریٹر فلڈ اور محرم الحرام کیلئے 55لاکھ روپے جبکہ رکشہ ڈسٹ بن، کوڑا اٹھانے کیلئے گدھا ریڑھی ، ہینڈ کارٹس اور دیگر سینٹری سامان کیلئے 25لاکھ روپے مختص کئے گئے ہیں ۔ اس موقع پر کونسلر راجہ رفعت عباس اور راؤ محمد طارق نے کہا کہ اپوزیشن عوامی مفاد کے حامل منصوبے کی راہ میں روڑے اٹکا رہی ہے شہر کے مختلف قبرستانوں میں اب گنجائش ختم ہوتی جا رہی ہے جس کی وجہ سے لوگ انتقال کر جانے والے اپنے پیاروں کو دفنانے کیلئے مشکلات کا شکار ہیں جس کیلئے ان قبرستانوں کیلئے مزید زمین کی اشد ضرورت ہے جن میں پرانا ٹبہ والا قبرستان اور محلہ شیرانوالہ قبرستان شامل ہیں انہوں نے کہا کہ چیئرمین گروپ شہر کی ترقی و فلاح کیلئے ہر ممکن اقدامات کرے گا انہوں نے اپوزیشن کو بھی دعوت دی کہ جب اﷲ تعالیٰ نے انہیں عوامی نمائندگی کیلئے میونسپل کمیٹی کی ذمہ داری سونپی ہے تو وہ ہمارے ساتھ مل کر عوام اور شہر کی خدمت کریں ۔ یاد رہے کہ میونسپل کمیٹی ملک وال میں اپوزیشن کو اکثریتی ممبران کی حمایت حاصل ہے جس کی وجہ سے سال 2017-18کا بجٹ بھی اپوزیشن کی مخالفت کی وجہ سے منظور نہیں ہو سکا تھا جس پر سیکرٹری لوکل گورنمنٹ پنجاب نے اپنے اختیارات استعمال کرتے ہوئے بجٹ کی منظوری دی ہے۔۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں